فیفا بدعنوانی: جوش ماریا مارن امریکی عدالت میں

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption فیفا بدعنوانی کیس میں گرفتار ہونے والے عہدےدار

گذشتہ برس برازیل میں فٹ بال کے عالمی کپ کے انتظامی امور کی سربراہی کرنے والے جوش ماریا مارن امریکی عدالت میں اپنے خلاف کرپشن کے الزمات کا سامنا کررہے ہیں تاہم انھوں نے ان الزامات کو مسترد کیا ہے۔

فیفا کے معاملے میں امریکہ کیوں آگے

انکشافات کا طوفان آنے والا ہے

ایک کڑور امریکی ڈالر کہاں گئے؟

زیورخ سے امریکہ منتقلی کے بعد وہ نیویارک کی عدالت میں پیش ہوئے۔ جہاں انھوں نے کہا کہ وہ بے قصور ہیں۔

جوش ماریا مارن فٹبال کی عالمی تنظیم فیفا کی گورننگ باڈی کے ان سات اہلکاروں میں شامل ہیں جنھیںرواں سال مئی میں سویٹزرلینڈ سے گرفتار کیا گیا تھا۔

جوش ماریا مارن سنہ 2014 کے عالمی کپ کے منتظمین میں شامل تھے۔ ان پر الزام ہے کہ انھوں نے امریکہ اور برازیل میں کھیلوں کی کمپنیوں کے ساتھ رابطوں میں لاکھوں ڈالر رشوت لی۔

اگر ان پر یہ الزامات ثابت ہوئے تو انھیں 20 سال قید کی سزا ہو سکتی ہے۔

فیفا کے79 سالہ صدر بلیٹر سنہ 1998 سے فیفا کے انتظامات سنبھالے ہوئے ہیں اور ہمیشہ ہی کسی بھی قسم کے ناجائز اقدامات سے انکار کرتے آئے ہیں۔ تاہم ان کے خلاف بھی سوئس حکام کی جانب سے تحقیقات کا آغاز دو ماہ قبل ہوا۔

اسی بارے میں