فلسطین سے فٹبال ورلڈ کپ کے کوالیفائنگ میچ منتقل

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption فلسطینی ٹیم نے نو نومبر کو سعودی عرب اور 12 نومبر کو ملائیشیا کے خلاف میچ کھیلنے ہیں

فٹبال کے نگران ادارے فیفا نے کہا ہے کہ سکیورٹی خدشات کی وجہ سے فلسطین اب سعودی عرب اور ملائیشیا کے خلاف عالمی کپ کے کوالیفائنگ راؤنڈ کے میچوں کی میزبانی نہیں کر سکتا ہے۔

فیفا کے مطابق فلسطین کو اب اپنے دونوں میچ لازمی طور پر کسی دوسری ملک کھیلنے ہوں گے۔

سعودی عرب نے جمعرات کو فلسطینی شہر رام اللہ میں ہونے والا میچ کھیلنے سے انکار کر دیا تھا۔

سعودی عرب کے علاوہ دیگر کئی عرب ممالک نے مقبوضہ غرب اردن میں میچ کھیلنے سے انکار کیا ہے کیونکہ ان کے مطابق میچ کھیلنا علاقے پر اسرائیل کے قبضے کو قانونی تسلیم کرنے کے مترادف ہو گا۔

گذشتہ دو ماہ سے علاقے میں پرتشدد واقعات میں اضافہ ہوا ہے اور ان واقعات میں متعدد افراد ہلاک ہو چکے ہیں۔

فیفا نے کہا ہے کہ یہ فیصلہ منگل کو فلسطین میں مقامی انتظامیہ اور فیفا کے سکیورٹی حکام کے درمیان ملاقات کے بعد کیا گیا۔

تصویر کے کاپی رائٹ BBC World Service
Image caption متحدہ عرب امارات کے خلاف میچ میں فلسطینی شائقین سیاسی بینرز اٹھا لائے تھے

فیفا کے بقول نے فلسطینی حکومت نے اس کی تصدیق کی کہ وہ اب میچوں کے دوران سلامتی اور سکیورٹی کی ضمانت نہیں دے سکتے ہیں۔

اس سے پہلے ملائیشیا نے فیفا کو ہیبرون سے میچ دوسری جگہ منتقل کرنے کی درخواست کی تھی تاہم بعد میں طے شدہ سٹیڈیم میں ہی میچ اس شرط پر کھیلنے میں رضامند ہو گیا تھا کہ اگر علاقے میں بدامنی میں اضافہ ہوتا ہے تو وہ میچ سے 24 گھنٹے قبل کھیلنے سے انکار کر سکتا ہے۔

ستمبر میں فلسطین کے متحدہ عرب امارات کے خلاف میچ کے موقعے پر فلسطینی شائقین نے سٹیڈیم میں سیاسی پیغامات پر مبنی بینرز اور رہنماؤں کی تصاویر ساتھ لے آئے تھے۔

رواں برس کے آغاز پر ہی سعودی عرب نے غرب اردن میں میچ کھیلنے سے انکار کر دیا تھا تاہم فلسطین کی فٹبال ایسوسی ایشن نے یہ کہہ کر میچ کو کسی دوسرے جگہ منتقل کرنے سے انکار کر دیا تھا کہ وہ اس سے ایک خطرناک مثال قائم ہو گی۔

اب دنوں میچ ایشیا کے کسی ملک میں کھیلے جائیں گے تاہم اب بھی حتمی مقام کا انتخاب نہیں کیا جا سکا۔

شیڈول کے تحت فلسطین نے سعودی عرب کے خلاف میچ 9 نومبر جبکہ ملائیشیا کے خلاف 12 نومبر کو کھیلنا ہے۔

اسی بارے میں