میچ کی جیت یونس کے نام

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption یونس خان کی ریٹائرمنٹ کی اطلاع دھچکے سے کم نہیں تھی: محمد حفیظ

پاکستانی کرکٹ ٹیم کے بیٹسمین محمد حفیظ کا کہنا ہے کہ تمام کھلاڑی پہلے ایک روزہ میچ میں بہت زیادہ پرجوش تھے اور وہ یونس خان کو الوداع کہتے ہوئے ان کے لیے میچ جیتنا چاہتے تھے۔

یاد رہے کہ یونس خان انگلینڈ کے خلاف ابوظہبی میںپہلا ون ڈے انٹرنیشنل کھیل کر محدود اووروں کی بین الاقوامی کرکٹ سے ریٹائر ہوگئے ہیں۔

آخری دن آٹھ وکٹوں کی امید

انگلینڈ سے جیتنے کا انتظار ختم

یونس کا غلط وقت پر درست فیصلہ

محمد حفیظ نے اس میچ میں شاندار سنچری سکور کی اور مین آف دا میچ رہے۔

محمد حفیظ کا کہنا ہے کہ ان کے لیےیونس خان کی ریٹائرمنٹ کی اطلاع دھچکے سے کم نہ تھی لیکن انھوں نے کہا کہ چونکہ یہ ان کا ذاتی فیصلہ تھا لہٰذا وہ اس کی عزت کرتے ہیں۔ ٹیم کا ہر کھلاڑی میچ جیت کر یونس خان کو تحفہ دینا چاہتا تھا۔

محمد حفیظ کا کہنا ہے کہ یونس خان پاکستانی ٹیم کے لیے رول ماڈل رہے ہیں اور ہر کھلاڑی نے ان سے بہت کچھ سیکھا ہے۔

تصویر کے کاپی رائٹ Getty
Image caption یونس خان پاکستانی ٹیم کے لیے رول ماڈل رہے ہیں اور ہر کھلاڑی نے ان سے بہت کچھ سیکھا ہے: محمد حفیظ

محمد حفیظ کا اپنی سنچری کے بارے میں کہنا ہے کہ انھیں خوشی ہے کہ ان کی کارکردگی ٹیم کے کام آرہی ہے۔ ’خوشی اس بات کی زیادہ ہے کہ ٹیم بھی جیت رہی ہے کیونکہ کبھی ایسا بھی ہوتا ہے کہ آپ اچھا سکور کرتے ہیں لیکن ٹیم نہیں جیت پاتی۔‘

محمد حفیظ کا کہنا ہے کہ سری لنکا کے حالیہ دورے میں ٹیم یہ طے کر چکی ہے کہ اب وہ ون ڈے کرکٹ جارحانہ انداز میں کھیلےگی۔

انگلینڈ کے خلاف پہلے ون ڈے میں بھی یہی ہوا کہ وکٹیں گریں لیکن ٹیم نے مائنڈ سیٹ نہیں بدلا۔ ’شعیب ملک کے ساتھ شراکت بہت اہم تھی جس کے بعد بابراعظم نے بھی بڑے اعتماد سے بیٹنگ کی اور جس طرح اپنی صلاحیتوں کا بھرپور مظاہرہ کیا وہ قابل تعریف ہے۔‘

محمد حفیظ کہتے ہیں کہ پاکستان کی اس جیت کی بنیاد اچھی بولنگ سے رکھی گئی جبکہ فیلڈنگ بھی غیرمعمولی رہی۔

اسی بارے میں