ٹی 20 سیریز:’ریکارڈ بک میں انگلینڈ کا پلہ بھاری‘

تصویر کے کاپی رائٹ Reuters
Image caption پاکستان اور انگلینڈ کے درمیان دس ٹی 20 انٹرنیشنل کھیلے جا چکے ہیں جن میں انگلینڈ کا پلہ بھاری رہا ہے

پاکستان اور انگلینڈ کے درمیان جمعرات سے ٹی 20 انٹرنیشنل سیریز کے تین مقابلوں کا پہلا میچ دبئی میں کھیلا جائے گا اور ٹی 20 مقابلوں کی عالمی رینکنگ میں پاکستان کرکٹ ٹیم کو اپنی دوسری پوزیش کا دفاع کرنا ہے تو اسے یہ سیریز کم از کم ایک کے مقابلے میں دو میچوں سے جیتنا ضروری ہے۔

انگلینڈ جس کے خلاف پاکستان نے اب تک مجموعی طور پر دس میچ کھیلے ہیں اور جن میں اسے صرف تین میں کامیابی ہوئی عالمی رینکنگ میں آٹھویں نمبر پر ہے۔

دوسرا میچ بھی دبئی میں جمعہ کو ہوگا جبکہ شارجہ 30 نومبر کو تیسرے اور آخری میچ کی میزبانی کرے گا۔

ٹی 20 رینکنگ میں دوسری پوزیشن برقرار رکھنے کی کوشش

پاکستان اور انگلینڈ کے درمیان کرکٹ سیریز کا یہ تیسرا اور آخری مرحلہ ہے۔

اس سے قبل پاکستان نے تین ٹیسٹ میچوں کی سیریز دو صفر سے جیتی جبکہ ون ڈے سیریز میں انگلینڈ نے تین ایک سے کامیابی حاصل کی ہے۔

پاکستانی ٹیم کی قیادت شاہد آفریدی کر رہے ہیں جو اس سیریز کو آئندہ سال بھارت میں ہونے والے ورلڈ ٹی 20 مقابلوں کی تیاری کے طور پر دیکھ رہے ہیں۔

یاد رہے کہ شاہد آفریدی اس ورلڈ ٹی 20 کے بعد بین الاقوامی کرکٹ کو خیرباد کہنے کا فیصلہ کر چکے ہیں۔

نامہ نگار عبدالرشید شکور کے مطابق شاہد آفریدی کو ٹی 20 انٹرنیشنل مقابلوں میں عمر گل کی سب سے زیادہ 85 وکٹوں کا ریکارڈ توڑنے کے لیے صرف تین وکٹیں درکار ہیں۔ زخمی ہونے کے بعد مکمل صحت یابی کے منتظر عمر گل کو اس سیریز کے لیے نہیں چُنا گیا

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption شاہد آفریدی کو ٹی 20 انٹرنیشنل مقابلوں میں سب سے زیادہ وکٹوں کا ریکارڈ بنانے کے لیے صرف تین وکٹیں درکار ہیں

پاکستان اور انگلینڈ کے درمیان دس ٹی 20 انٹرنیشنل کھیلے جا چکے ہیں جن میں انگلینڈ کا پلہ بھاری رہا ہے۔ اس نے سات میچ جیتے ہیں پاکستان نے صرف تین میچوں میں کامیابی حاصل کی ہے۔

دونوں ٹیموں کے درمیان آخری بار ٹی 20 سیریز سنہ 2012 میں متحدہ عرب امارات میں ہی کھیلی گئی تھی جو انگلینڈ نے دو ایک سے جیتی تھی۔

دلچسپ بات یہ ہے کہ اس وقت بھی انگلینڈ کی ٹیم پاکستان سے ٹیسٹ سیریز تین صفر سے ہارگئی تھی لیکن اس کے بعد اس نے ون ڈے سیریز چار صفر اور ٹی 20 سیریز دو ایک سے جیت لی تھی۔

پاکستانی ٹیم کا اس سال ٹی 20 انٹرنیشنل مقابلوں میں ریکارڈ خاصا متاثر کن رہا ہے۔ اس نے اب تک کھیلے گئے سات میں سے چھ میچز جیتے ہیں اور صرف ایک میں اسے شکست ہوئی ہے۔

انگلینڈ کی ٹیم اس سال صرف دو ٹی 20 انٹرنیشنل کھیل پائی ہے لیکن اس نے یہ دونوں میچ جیتے ہیں۔

سنہ 2007 میں پہلے ورلڈ ٹی 20 مقابلوں کی رنر اپ اور 2009 کے ورلڈ ٹی 20 کی فاتح پاکستانی ٹیم اس وقت اس طرز کی کرکٹ کی عالمی رینکنگ میں دوسرے نمبر پر ہے۔

تصویر کے کاپی رائٹ Getty
Image caption یہ ورلڈ ٹی 20 مقابلوں کی تیاری کا اچھا موقع ہے: ٹریور بیلس

اس پوزیشن پر برقرار رہنے کے لیے پاکستان کو کم از کم دو ایک کے فرق سے یہ سیریز جیتنی ہوگی۔

انگلینڈ کی ٹیم فی الوقت ٹی 20 رینکنگ میں آٹھویں نمبر پر ہے تاہم انگلش کوچ ٹریور بیلس نے خبر رساں ادارے اے ایف پی سے بات کرتے ہوئے کہا ہے کہ ون ڈے سیریز میں پاکستان پر فتح سے ان کی ٹیم کے حوصلے بلند ہیں۔

ان کا کہنا تھا کہ ’انگلش بلے بازوں نے اس ٹی 20 سیریز سے قبل جس طریقے سے بلے بازی کی ہے اس سے انھیں بہت اعتماد ملا ہوگا اور وہ جان گئے ہیں کہ وہ ان کنڈیشنز میں کھیل سکتے ہیں۔‘

ان کا یہ بھی کہنا تھا کہ یہ ورلڈ ٹی 20 مقابلوں کی تیاری کا اچھا موقع ہے۔

’یہ مارچ اپریل میں ہونے والے ورلڈ ٹی 20 مقابلوں کی جانب ایک اور قدم ہے۔ ہم یہ ٹی 20 سیریز جیتنا چاہتے ہیں اور ہم یہ کر سکتے ہیں لیکن یہ تجربات کا موقع بھی ہے۔‘

اسی بارے میں