’بی سی سی آئی نے آمدنی سے حصہ نہیں مانگا‘

تصویر کے کاپی رائٹ AFP

پاکستان کے کرکٹ بورڈ نے کہا ہے کہ بھارتی کرکٹ بورڈ نے پاک بھارت کرکٹ سیریز کی آمدنی میں حصے کے بارے میں کوئی بات نہیں کی ہے۔

پاکستان کرکٹ بورڈ کے مطابق اس بارے میں ذرائع ابلاغ میں کی جانے والی قیاس آرائیاں غلط ہیں۔

پاک بھارت کرکٹ، شہریار خان کا وزیراعظم کو خط

پاک بھارت کرکٹ سیریز، سری لنکا میزبانی پر تیار

پاک بھارت کرکٹ: شہریار خان اور ششانک منوہرکی ملاقات

بھارت کی جانب سے متحدہ عرب امارات میں کھیلنے سے انکار کے بعد دونوں کرکٹ بورڈز یہ سیریز سری لنکا میں کھیلنے پر آمادہ ہیں اور دونوں نے اپنی اپنی حکومتوں سے اس بارے میں رابطہ بھی کیا ہے۔

پاکستان کرکٹ بورڈ کا کہنا ہے کہ اس نے حکومت سے این او سی نہیں مانگا کیونکہ اس معاملے پر جو بھی فیصلہ ہونا ہے وہ حکومت نے کرنا ہے۔

دوسری جانب بھارتی کرکٹ بورڈ کے نائب صدر راجیو شکلا نے بھی پاکستان کے نجی ٹی وی چینل اے آر وائی سے بات کرتے ہوئے کہا ہے کہ پاکستان کرکٹ بورڈ نے مفاہمت کی یادداشت میں کہیں یہ نہیں لکھا کہ متحدہ عرب امارات اس کا ہوم گراؤنڈ ہے۔ یادداشت میں یہ لکھا ہے کہ اگر پاک بھارت سیریز پاکستان میں نہ ہوئی تو باہمی رضامندی سے کسی نیوٹرل مقام پر کھیلی جاسکتی ہے۔

راجیو شکلا کا کہنا ہے کہ بی سی سی آئی کو اگر بھارتی حکومت کی جانب سے اجازت مل گئی تو اسے سری لنکا میں سیریز کھیلنے پر کوئی اعتراض نہیں ہے۔

بھارتی کرکٹ بورڈ کے نائب صدر نے بھی پاکستان کرکٹ بورڈ کے اس بیان کی تائید کی ہے کہ اس سیریز سے جو بھی آمدنی ہوگی وہ پاکستان کرکٹ بورڈ کی ہوگی۔

اسی بارے میں