انگلش فرسٹ کلاس کرکٹ میں ہیلمٹ لازمی

تصویر کے کاپی رائٹ
Image caption وکٹ کیپر اور وہ فیلڈرز جو سمٹپ سے آٹھ گز کے دائرے میں ہوں گے ان کے لیے تو ہلمیٹ پہننا لازمی قرار دیا جائےگا لیکن وکٹ کے پیچھے آ‌ف سائڈ پر سلپ پر کھڑا ہونے والا فیلڈر اس سے مثتثنی ہوگا

انگلینڈ میں اگلے سیزن سے فرسٹ کلاس کرکٹ میں تمام بلے بازوں اور مخصوص فیلڈرز کے لیے ہیلمٹ پہننا لازمی کر دیا گیا ہے۔

انگلینڈ اور ویلز کرکٹ بورڈ (ای سی بی) نے اس اہم اقدام کا اعلان آسٹریلوی کرکٹر فل ہیوز کے انتقال کے تقریباً ایک برس بعد کیا ہے جب وہ گردن کے اوپری حصے پر گيند لگنے سے ہلاک ہوگئے تھے۔

کرکٹ بورڈ نے جو تبدیلیاں کی ہیں اس کے تحت بلے بازوں کو، فاسٹ، میڈیم فاسٹ بالر اور سپن گیند بازوں کا سامنا کرتے وقت بھی ہیلمٹ پہننا لازمی ہوگا۔

اس کے علاوہ وکٹ کیپر اور وہ فیلڈرز جو وکٹوں سے آٹھ گز کے دائرے میں ہوں گے ان کے لیے تو ہیلمٹ لازمی قرار دیا گیا ہے لیکن وکٹ کے پیچھے آ‌ف سائیڈ پر سلپ میں کھڑا ہونے والا فیلڈر اس سے مستثنی ہوگا۔

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption آ‎سٹریلوی بلے باز فل ہیوز کو نومبر 2014 میں سڈنی میں ایک گھریلو میچ کے دوران گیند لگی تھی اور وہ محض 25 برس کی عمر میں گیند لگنے کے دو روز بعد چل بسے تھے

تمام مرد و خواتین کرکٹرز پر پیشہ ورانہ کرکٹ کے میچ کھیلتے وقت ایسے ہیلمٹ پہننا لازمی ہوگا جو برطانوی سیفٹی معیار پر پورا اترتے ہوں۔

انگلینڈ کرکٹ بورڈ نے تمام طرح کی تفریحی کرکٹ کے دوران بھی کھلاڑیوں کو ہیلمٹ پہننے کا مشورہ دیا ہے۔

انگلینڈ کرکٹ بورڈ اور پروفیشنل کرکٹ ایسوسی ایشن نے مشترکہ طور پر جائزہ لینے کے بعد اس طرح کی سفارشات کی ہیں تاکہ کھیل کے دوران سر یا چہرے پر لگنے والی چوٹوں سے بچا جا سکے۔

بورڈ کے صدر نک پیرس نے کہا ’جیسا کہ ہم نے حال کے دنوں میں دیکھا ہے کہ کرکٹ کی گیند خطرناک طریقے سے زخم پہنچا سکتی ہے، کھلاڑیوں کے لیے ضروری ہے کہ وہ بیٹنگ کرتے وقت مناسب احتیاط برتیں اور وکٹ کیپر اور سٹمپ کے قریب فیلڈنگ کرنے والے کو بھی یہی احتیاط برتنی چاہیے۔‘

اسی بارے میں