ایڈیلیڈ: نیوزی لینڈ کے 202 رنز، آسٹریلیا کے دو کھلاڑی آؤٹ

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption یہ پہلا انٹرنیشنل کرکٹ میچ ہے جس میں گلابی رنگ کی گیند استعمال کی جا رہی ہے

ٹیسٹ کرکٹ کی 138 سالہ تاریخ کا پہلا ڈے، نائٹ میچ آسٹریلیا اور نیوزی لینڈ کے درمیان ایڈیلیڈ میں کھیلا جا رہا ہے۔

جمعے کو اس ٹیسٹ میچ کے پہلے دن کھیل کے اختتام پر نیوزی لینڈ کی پہلی اننگز 202 رنز کے جواب میں آسٹریلیا نے دو وکٹوں کے نقصان پر 54 رنز بنائے تھے۔

آسٹریلیا کو پہلی اننگز کا خسارہ ختم کرنے کے لیے مزید 148 رنز درکار ہیں اور اس کی آٹھ وکٹیں ابھی باقی ہیں۔

میچ کا تفصیلی سکور کارڈ

دن رات کا ٹیسٹ اور گیندگلابی

پرتھ ٹیسٹ ہار جیت کے فیصلے کے بغیر ختم

ایڈیلیڈ میں کھیلے جانے والے تیسرے ٹیسٹ میچ کے پہلے دن جب کھیل کا اختتام ہوا تو آسٹریلیا کی جانب سے سٹیون سمتھ 24 اور ایڈم وجز نو رنز بنا کر کریز پر موجود تھے۔

اوپنر ڈیوڈ وارنر ایک اور جو برنز 14 رنز بنا کر آؤٹ ہوئے۔نیوزی لینڈ کی جانب سے ٹرینٹ بولٹ اور بریسویل نے ایک، ایک وکٹ حاصل کی۔

اس سے قبل نیوزی لینڈ کے کپتان نے اس میچ میں ٹاس جیت کر پہلے بلے بازی کا فیصلہ کیا تو پوری ٹیم 202 رنز بنا کر آؤٹ ہوگئی۔

نیوزی لینڈ کو آغاز میں ہی اس وقت نقصان اٹھانا پڑا جب ہیزل وڈ نے مارٹن گپتل کو صرف ایک کے انفرادی سکور پر ایل بی ڈبلیو کر دیا۔

یوں ہیزل وڈ کسی انٹرنیشنل کرکٹ میچ میں گلابی گیند سے وکٹ لینے والے پہلے کرکٹر بن گئے۔

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption پیٹر سڈل نے ٹیسٹ کرکٹ میں اپنی 200 وکٹیں مکمل کر لیں

دوسری وکٹ کے لیے لیتھم اور ولیمسن کے درمیان 52 رنز کی شراکت ہوئی جس کا خاتمہ مچل سٹارک نے یارکر پر ولیمسن کو ایل بی ڈبلیو کر کے کیا۔ وہ 22 رنز بنا سکے۔

ٹام لیتھم نے نصف سنچری بنائی اور انھیں نیتھن لیون نے وکٹوں کے پیچھے کیچ کروا کر آسٹریلیا کو تیسری کامیابی دلوائی۔

آؤٹ ہونے والے چوتھے بلے باز راس ٹیلر تھے جو 21 رنز بنا کر پیٹر سڈل کی وکٹ بنے۔ اس سے اگلے ہی اوور میں سٹارک نے میککلم کو واپس پویلین بھیج کر دوسری اور ٹیم کے لیے پانچویں وکٹ لی۔

آسٹریلیا کے لیے مچل سٹارک اور جوش ہیزل وڈ تین، تین وکٹوں کے ساتھ سب سے کامیاب بولر رہے جبکہ پیٹر سڈل نے دو وکٹیں لیں۔

سڈل نے ڈگ بریسول کی وکٹ کے ساتھ ہی ٹیسٹ کرکٹ میں اپنی 200 وکٹیں بھی مکمل کیں۔

خیال رہے کہ یہ پہلا انٹرنیشنل کرکٹ میچ ہے جس میں گلابی رنگ کی گیند استعمال کی جا رہی ہے جبکہ کھلاڑی روایتی سفید رنگ کا لباس ہی استعمال کر رہے ہیں۔

اس سے قبل صرف ایک روزہ اور ٹی 20 طرز کی کرکٹ میں ہی ڈے نائٹ میچ کھیلے جاتے رہے ہیں جن میں رنگین وردی اور سفید گیند استعمال ہوتی ہے۔

اسی بارے میں