بھارت کی ہاں یا ناں، فیصلہ پیر کو متوقع

Image caption پاکستان کرکٹ بورڈ کے چیرمین شہریار خان اور بھارتی کرکٹ بورڈ کے صدر ششانک منوہر کے درمیان یہ طے پایا تھا کہ پاکستان اور بھارت یہ سیریز سری لنکا میں کھیلیں گے

پاکستان کرکٹ بورڈ نے بی سی سی آئی پر واضح کردیا ہے کہ وہ اگلے ایک دو روز میں اسے بتادے کہ وہ پاکستان کے ساتھ سیریز کھیلنا چاہتا ہے یا نہیں؟ اگر اس نے جواب نہ دیا تو پاکستان کرکٹ بورڈ اس سیریز کو منسوخ سمجھے گا۔

پاکستان کرکٹ بورڈ نے بی سی سی آئی کو جمعہ کے روز ایک ای میل کی تھی جس میں کہا گیا ہے کہ بی سی سی آئی کی جانب سے تاخیر کے سبب پاکستان کرکٹ بورڈ کے لیے سیریز کے انتظامات کرنا مشکل ہوتا جارہا ہے۔

واضح رہے کہ یہ سیریز ممکنہ طور پر دسمبر کے دوسرے ہفتے سے سری لنکا میں کھیلی جانے والی ہے جس میں تین ون ڈے انٹرنیشنل اور دو ٹی ٹوئنٹی میچز ہوں گے۔

بھارتی کرکٹ بورڈ نے ابھی تک پاکستان کرکٹ بورڈ کو کوئی جواب نہیں دیا ہے لیکن اس کے عہدیدار یہی کہتے آئے ہیں کہ پاک بھارت کرکٹ سیریز کا فیصلہ وزیراعظم مودی کریں گے۔

تاہم اب بی سی سی آئی کے عہدیداران بھی اپنی حکومت کی جانب سے کوئی واضح اعلان نہ کیے جانے پر بے یقینی کی کیفیت میں ہیں اور بی سی سی آئی کے سیکریٹری انوراگ ٹھاکر کہہ چکے ہیں کہ ’جب دونوں ملک آئی سی سی کے ایونٹس میں کھیل سکتے ہیں تو دو طرفہ کرکٹ کیوں نہیں؟‘

یاد رہے کہ پاکستان کرکٹ بورڈ کے چیرمین شہریار خان اور بھارتی کرکٹ بورڈ کے صدر ششانک منوہر کے درمیان انگلینڈ اینڈ ویلز کرکٹ بورڈ کےصدر جائلز کلارک کی کوششوں سے دبئی میں ہونے والی ملاقات میں یہ طے پایا تھا کہ پاکستان اور بھارت یہ سیریز سری لنکا میں کھیلیں گے لیکن اس کا تمام تر انحصار دونوں حکومتوں کی اجازت پر تھا۔

پاکستانی حکومت پاکستان کرکٹ بورڈ کو یہ سیریز سری لنکا میں کھیلنے کی اجازت دے چکی ہے۔

اسی بارے میں