عامر کی موجودگی پر اظہر اور حفیظ کا بائیکاٹ

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption پاکستان کرکٹ بورڈ نے محمد عامر کی مخالفت کرنے والے کرکٹرز کو منانے کی ذمہ داری ہیڈ کوچ وقار یونس کو سونپی تھی

پاکستان کے ون ڈے کپتان اظہر علی اور بیٹسمین محمد حفیظ نے سپاٹ فکسنگ میں ملوث سزا یافتہ فاسٹ بولر محمد عامر کی موجودگی میں قومی فٹنس کیمپ کا بائیکاٹ کر دیا ہے۔

یہ کیمپ لاہور میں جاری ہے جس میں پاکستان کرکٹ بورڈ نے محمد عامر کو بھی شامل کیا ہے، جو اس بات کا اشارہ ہے کہ وہ آئندہ ماہ نیوزی لینڈ کے دورے کے لیے پاکستانی ٹیم میں شامل کر لیے جائیں گے۔

’ایسے کھلاڑی کے ساتھ نہیں کھیل سکتا جس نے ملک کو بدنام کیا ہو‘

’عامر بولنگ کرنا جانتا ہے‘

ڈومیسٹک کرکٹ کھیلنے والے متعدد کرکٹرز کو جمعرات کے روز کیمپ میں شمولیت اختیار کرنی تھی تاہم ون ڈے کپتان اظہر علی اور محمد حفیظ نے یہ موقف اختیار کیا ہے کہ وہ کسی بھی صورت میں ملک کی بدنامی کا سبب بننے والے کرکٹرز کے ساتھ کرکٹ نہیں کھیل سکتے۔

یاد رہے کہ محمد حفیظ شروع سے محمد عامر کے بارے میں انتہائی سخت موقف اختیار کیے ہوئے ہیں اور انھوں نے بنگلہ دیشی لیگ میں بھی اس ٹیم کی طرف سے کھیلنے سے انکار کر دیا تھا جس میں محمد عامر شامل تھے۔

ون ڈے کپتان اظہرعلی کا اس بارے میں سخت موقف پاکستان کرکٹ بورڈ کے لیے زیادہ پریشانی کا سبب بنا ہے۔

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption ون ڈے کپتان اظہرعلی کا اس بارے میں سخت موقف پاکستان کرکٹ بورڈ کے لیے زیادہ پریشانی کا سبب بنا ہے

یہ اطلاعات بھی ہیں کہ پاکستان کے ٹیسٹ کپتان مصباح الحق بھی محمد عامر کی واپسی پر سخت تحفظات رکھتے ہیں۔

پاکستان کرکٹ بورڈ نے محمد عامر کی مخالفت کرنے والے کرکٹرز کو منانے کی ذمہ داری ہیڈ کوچ وقار یونس کو سونپی تھی لیکن محمد حفیظ اور اظہرعلی نے ان پر یہ بات واضح کر دی کہ اگر یہ محمد عامر کو واپس لانے کی پالیسی پاکستان کرکٹ بورڈ نے بنائی تھی تو چیئرمین شہریار خان کو پہلے تمام کھلاڑیوں کے تحفظات دور کرنے چاہیے تھے۔

اس بارے میں ابھی تک پاکستان کرکٹ بورڈ کا موقف سامنے نہیں آیا ہے۔

اسی بارے میں