جیمز اینڈرسن ٹیم میں واپسی کے لیےتیار

تصویر کے کاپی رائٹ Getty
Image caption جیمز اینڈرسن، ٹیم میں کرس ووکس کی جگہ لیں گے

انگلینڈ کرکٹ ٹیم کے فاسٹ بولر جیمز اینڈرسن کیپ ٹاؤن میں جنوبی افریقہ کے خلاف کھیلے جانے والے دوسرے ٹیسٹ میچ کے لیے ٹیم میں واپسی کے لیے تیار ہیں۔

جیمز اینڈرسن ڈربن میں کھیلا گیا پہلا ٹیسٹ میچ انجری کے باعث نہیں کھیل پائے تھے۔ اس میچ میں انگلینڈ نے جنوبی افریقہ کو 241 رنز سے شکست دی تھی۔

ڈربن ٹیسٹ میں جنوبی افریقہ کو شکست فاش

تاہم اب سنیچر سے نیو لینڈز میں کھیلے جانے والے دوسرے ٹیسٹ میچ میں اینڈرسن کو کرس ووکس کی جگہ ٹیم میں شامل کیے جانے کا امکان ہے۔

انگلش ٹیم کے کوچ ٹریور بے لس کا کہنا ہے کہ ’وہ ہمارے پاس آئے اور کہا کہ ان کا جسم اب بہتر محسوس کر رہا ہے۔ میرے خیال میں آپ کو ان کے ساتھ جانا چاہیے، تو دیکھیں کیا ہوتا ہے۔‘

جیمز اینڈرسن نے ٹیم میں واپسی کے لیے نیٹس میں سخت محنت کی ہے۔ 33 سالہ اینڈرسن انگلینڈ کے سب سے زیادہ وکٹیں لینے والے بولر ہیں۔

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption ڈیل سٹین پہلے ٹیسٹ میچ میں کندھے کی انجری کا شکار ہو گئے تھے

انگلش فاسٹ بولر جنوبی افریقہ کے گذشتہ دو دوروں کے دوران کھیلے گئے پانچ ٹیسٹ میچوں میں 18 وکٹیں حاصل کر چکے ہیں۔

دوسری جانب جنوبی افریقہ کے تیز بولر ڈیل سٹین بھی کندھے میں انجری کی وجہ سے دوسرے ٹیسٹ میچ میں حصہ نہیں لے پائیں گے۔

ڈیل سٹین پہلے ٹیسٹ میچ میں انجری کے باعث دو بار میدان سے باہر گئے تھے، ان کی جگہ کیگیسو ربادا کو ٹیم میں شامل کیا جا سکتا ہے۔

جنوبی افریقہ کے وکٹ کیپر بیٹسمین کوئنٹن ڈی کاک کو بھی ٹیم میں شامل کیے جانے کا امکان ہے تاکہ اے بی ڈیولیئر صرف اپنی بلے بازی پر توجہ دے سکیں۔

اسی بارے میں