پہلے ریٹائرمنٹ کا اعلان پھر کھیلنے کی اجازت

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption ریٹائرڈ کرکٹرز کی یہ ماسٹرز چیمپینز لیگ 28 جنوری سے متحدہ عرب امارات میں کھیلی جائے گی

پاکستان کرکٹ بورڈ نے ماسٹرز چیمپئنز لیگ میں شرکت کرنے والے پاکستانی کرکٹرز پر واضح کردیا ہے کہ انھیں اس لیگ میں شرکت کی اجازت صرف اسی صورت میں ملے گی جب وہ باضابطہ طور پر انٹرنیشنل کرکٹ سے ریٹائرمنٹ کا اعلان کرتے ہوئے اسے تحریری طور پر مطلع کریں گے۔

ریٹائرڈ کرکٹرز کی یہ ماسٹرز چیمپینز لیگ 28 جنوری سے متحدہ عرب امارات میں کھیلی جائے گی۔

ماضی کے کرکٹرز کی آج بھی کشش ہے

پاکستان کے دس کرکٹرز محمد یوسف، عبدالرزاق، ثقلین مشتاق، توفیق عمر، رانا نوید الحسن، سلیم الہی، حسن رضا، اظہر محمود، ہمایوں فرحت اور یاسر حمید نے یہ لیگ کھیلنے کا معاہدہ کر رکھا ہے۔

پاکستان کرکٹ بورڈ کے ترجمان نے بی بی سی کو بتایا کہ متعدد کرکٹرز نے اس لیگ میں کھیلنے کے لیے پاکستان کرکٹ بورڈ سے این او سی کی درخواست دے رکھی ہے تاہم بورڈ کی یہ پالیسی واضح ہے کہ اگر وہ ماسٹرز چیمپینز لیگ کھیلنا چاہتے ہیں تو پہلے انٹرنیشنل کرکٹ سے باضابطہ ریٹائرمنٹ کا اعلان کریں تاہم وہ فرسٹ کلاس کرکٹ جاری رکھ سکتے ہیں۔

دلچسپ بات یہ ہے کہ ماسٹرچیمپینز لیگ سے معاہدہ کرنے والے کسی بھی پاکستانی کرکٹر نے انٹرنیشنل کرکٹ سے ریٹائرمنٹ کا باضابطہ اعلان نہیں کیا ہے۔

محمد یوسف نے مارچ سنہ 2010 میں بین الاقوامی کرکٹ سے ریٹائرمنٹ کا گول مول انداز میں اعلان کیا تھا اور کہا تھا کہ وہ فی الحال ریٹائر ہو رہے ہیں تاہم اس کے بعد وہ اسی سال دوبارہ ٹیسٹ اور ون ڈے کھیلے تھے۔

عبدالرزاق جنھوں نے ماسٹرز لیگ سے معاہدہ کر رکھا ہے وہ پاکستان سپر لیگ میں بھی شامل ہیں انھیں لاہور قلندر نے اپنے سپلیمنٹری کرکٹرز میں شامل کیا ہے۔

اسی بارے میں