پانچ برس بعد عامر کی مایوسی اور وکٹوں کی سنچری

تصویر کے کاپی رائٹ Getty
Image caption سٹیڈیم میں ایک بینر پر تحریر تھا: ’ہو سکتا ہے عامر سکیورٹی کو فکس کر دیں‘

فاسٹ بولر محمد عامر نے پانچ برس کی پابندی کے بعد پہلا بین لاقوامی کرکٹ میچ کھیلا تو ان کے لیے ناپسندگی کا اظہار کیا گیا تاہم انھوں نے نیوزی لینڈ کے خلاف ٹی 20 میچ میں ایک وکٹ حاصل کی اور پاکستان یہ میچ جیت گیا۔

پانچ برس کے وقفے کے بعد پہلے بین الاقوامی میچ میں محمد عامر نے چار اووروں میں 31 رنز دے کر ایک وکٹ حاصل کی۔

پاکستان نیوزی لینڈ کے درمیان میچ کی تصاویر

عامر کی واپسی، پاکستان بھی جیت گیا

سپاٹ فکسنگ کی سزا کی وجہ سے خیال کیا جا رہا تھا کہ محمد عامر پر اس میچ میں دباؤ ہو گا۔

اس میچ میں محمد عامر کو کیچ چھوڑے جانے پر مایوسی کا سامنا بھی کرنا پڑا۔

پہلے ان کی گیند پر کین ولیمسن کا کیچ کپتان شاہد آفریدی نے چھوڑا جبکہ دوسرے سپیل میں صہیب مقصود نے ٹاڈ ایسٹل کا صفر پر آسان کیچ چھوڑ دیا۔

تصویر کے کاپی رائٹ Getty
Image caption عامر نے کرکٹ کے تینوں فارمیٹوں میں سو وکٹیں پوری کر لی ہیں

محمد عامر پر پانچ برس کے بعد پہلے بین الاقوامی میچ میں وکٹ لینے کی کوششیں اس وقت کامیاب ہوئیں جب انھوں نے میٹ ہینری کو آؤٹ کیا جن کا کیچ کپتان شاہد آفریدی نے لیا۔

عامر کے لیے یہ وکٹ اس وجہ سے بھی اہم تھی کہ ان کی بین الاقوامی کرکٹ میچوں کے تینوں فارمیٹوں میں وکٹوں کی سنچری مکمل ہو گئی ہے۔

عامر نے 14 ٹیسٹ میچوں میں 51، 15 ایک روزہ میچوں میں 25 اور 19 ٹی 20 میچوں میں 24 وکٹیں حاصل کی ہیں۔

آکلینڈ میں کھیلے جانے والے اس میچ میں جہاں میڈیا کی نظریں محمد عامر پر تھیں، وہیں سٹیڈیم میں موجود شائقین کرکٹ بھی عامر کے بارے میں بینرز ساتھ لائے تھے۔

امریکی خبر رساں ایجنسی اے پی کے مطابق پانچ برس کے وقفے کے بعد محمد عامر پانچ برس بعد پہلی بار میدان میں اترے تو ان کے ساتھی کرکٹروں نے ان کا استقبال کیا اور نہ ہی کوئی تھپکی دی۔

اسی بارے میں