امریکہ میں فٹبال ٹیم کی پہلی خاتون کوچ

تصویر کے کاپی رائٹ AP
Image caption کیتھرین سمتھ کو بفیلو بلز ٹیم کی کوالٹی کنٹرول کی غرض سے ٹیم کا خصوصی کوچ مقرر کیا گیا ہے

امریکہ میں نیشنل فٹبال لیگ (این ایف ایل) سے وابستہ ٹیم ’بفیلو بلز‘ ملک کی ایسی پہلی ٹیم ہے جس نے ایک خاتون کو مکمل اختیارات کے ساتھ ٹیم کا کوچ مقرر کیا ہے۔

کیتھرین سمتھ کو بفیلو بلز ٹیم کی کوالٹی کنٹرول کی غرض سے ٹیم کا خصوصی کوچ مقرر کیا گیا ہے۔

اس سے پہلے کیتھرین سمتھ اس ٹیم کی انتظامی امور کے معاون کے طور پر کام کرتی رہی تھیں۔

ہیڈ کوچ ریکس رائن نے ایک بیان میں کہا ’وہ اپنی معلومات اور مضبوط عزم کے سبب اس پرموشن کی مستحق ہیں۔ انہوں نے ثابت کر دیا ہے کہ وہ اگلے قدم کے لیے تیار ہیں، تو ان کو یہ موقع ملنے کے لیے میں فخر محسوس کرتا ہوں۔‘

رائن نے کہا کہ انہوں نے اس بارے میں ’اریزونا کارڈینلز‘ کے ہیڈ کوچ بروس آریئنز سے بات چيت کی ہے جنہوں نےگذشتہ برس جین والٹر کو سیزن سے پہلے کچھ وقفے کے لیے کوچنگ کے لیے مقرر کیا تھا۔

انہوں نے اس سلسلے میں امریکہ میں کھیلوں میں صنفی مساوات کی ایک اور مثال کا حوالہ پیش کرتے ہوئے بتایا کہ نیشنل باسکیٹ بال کی ایک ٹیم سان انٹینیو سپرسز نے بھی ایک خاتون کو اپنا کوچ مقرر کیا ہے۔

کیتھرین سمتھ نے ایک دوسری ٹیم ’نیو یارک جیٹ‘ کے لیے بھی پہلے 12 برس تک کام کیا تھا۔

کوالٹی کنٹرول کرنے والے کوچز کھیل سے قبل مد مقابل ٹیم کا تجزیہ پیش کرتے ہیں اور اس عہدہ کو ایک سینیئر پوزیشن کے طور پر دیکھا جاتا ہے۔

بفیلو بلز کے کھلاڑیوں نے بھی کیتھرین سمتھ کی اس عہدے پر تقرری کا خیر مقدم کیا ہے۔

ایک کھلاڑي مارقیز گیری نے اپنی ٹوئٹ میں کہا ’کوچ کیتھرین ستھ کو مبارک باد! خوش آمدید! لوگوں یہ بڑي بات ہے۔‘

اسی بارے میں