اولمپکس سے قبل زِکا وائرس سے بچاؤ کا منصوبہ

اپ کی ڈیوائس پر پلے بیک سپورٹ دستیاب نہیں

برازیل کے شہر ریو دی جنیرو کے حکام نے اولمپکس گیمز کے دوران زِکا وائرس کے پھیلاؤ کو روکنے کے منصوبے کا اعلان کیا ہے۔

مچھر سے پیدا ہونے والی بیماری کے پھیلاؤ سے برازیل اور بیرون ممالک گہری تشویش پائی جاتی ہے۔

زکا وائرس کا خطرہ، خواتین کو حمل سے گریز کا مشورہ

برازیل میں زکا وائرس سے چھوٹے سر والے بچوں کی پیدائش

زِکا وائرس مچھر کے ذریعے پھیل رہا ہے اور اس کی وجہ سے پیدائش میں بڑے نقائص سامنے آ رہے ہیں۔

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption برازیل میں رواں سال اگست کے مہینے میں اولمپک گیمز منعقد ہو رہے ہیں

حکام نے کہا ہے کہ رواں سال ریو میں ہونے والے اولمپکس مقابلوں سے چار ماہ قبل جانچ کا کام شروع ہوگا اور مچھروں کے پیدا ہونے کے ذرائع سے چھٹکارا حاصل کر لیا جائے گا۔

اس کے علاوہ اولمپکس کے دوران بھی روزانہ صفائی کا خاص خیال رکھا جائے گا۔

لیکن کھلاڑیوں کی صحت کو سامنے رکھتے ہوئے وائرس مارنے کے لیے دھونی دینے کا کام صرف مخصوص مقامات پر کیا جائے گا۔

تصویر کے کاپی رائٹ Divulgacao
Image caption کھلاڑیوں کی صحت کے پیش نظر مچھروں کو مارنے کے لیے دھواں مخصوص مقامات پر ہی چھوڑا جائے گا

اس کے علاوہ حکام کا یہ بھی کہنا ہے کہ یہ گیمز اگست ماہ ایسے وقت ہو رہے ہیں جو خشک اور سرد ہوں گے جس دوران مچھروں کی افزائش نسبتا کم ہی ہوتی ہے اور اس وائرس سے ہونے والے کیسز کم ہی سامنے آتے ہیں۔

زِکا نامی یہ وائرس ايڈيز جیپٹی مچھر (ايک مَچھَر جِس سے زرد بُخار ہو جاتا ہے) کے کاٹنے سے جسم میں منتقل ہوتا ہے۔ اس مچھر کی وجہ سے ڈینگی بخار اور چکنگنیا (گرم ملکوں میں مچھر کے ذریعے پھیلنے والی ایک بیماری ) نامی بیماری بھی پھیلتی ہے۔

یہ بیماری سنہ 1940 میں پہلی بار افریقہ میں سامنے آئی تھی اور اب یہ لاطینی امریکہ میں پھیل رہی ہے۔

سائنسدانوں کا کہنا ہے کہ اس وائرس کا مائکروسیفیلی سے تعلق کے شواہد ہیں جس کی وجہ سے چھوٹے سروں والے بچے پیدا ہو رہے ہیں۔

تصویر کے کاپی رائٹ Thinkstock
Image caption زکا وائرس سے بچوں کی پیدائش میں نقائس سامنے آ رہے ہیں

زِکا وائرس سے بخار اور بدن پر دانے ہو سکتے ہیں لیکن عام طور پر اس کی علامت سامنے نہیں آتی ہے اور اس کا کوئی علاج ابھی سامنے نہیں آیا ہے۔

اس وقت زِکا وائرس سے نمٹنے کا صرف ایک ہی طریقہ ہے کہ جہاں مچھروں کی نسلوں کی افزائش ہوتی ہے اُس ٹھہرے ہوئے پانی کو ہٹایا جائے۔

یہ بیماری سب سے زیادہ برازیل میں پھیلی ہوئی ہے۔ برازیل میں چھوٹے سر والے بچوں کی پیدائش کا سلسلہ جاری ہے اور اکتوبر سےاب تک اس بیماری سے متاثرہ چار ہزار بچے پیدا ہو چکے ہیں۔

دوسری جانب امریکہ کینیڈا اور یورپی یونین کے صحت کے شعبے نے حاملہ خواتین کو برازیل کے سفر سے باز رہنے کے لیے کہا ہے۔

اسی بارے میں