سات پاؤنڈ کی شرط، چھ ماہ کی پابندی

تصویر کے کاپی رائٹ Getty

آسٹریلوی کرکٹ بورڈ نے نیوزی لینڈ اور آسٹریلیا کی خواتین ٹیموں کے ٹیسٹ میچ کے دوران 15.50 آسٹریلین ڈالر (7.60) برطانوی پاؤنڈ کی شرط لگانے پر پیئپا کلیری پر چھ ماہ کی پابندی عائد کر دی ہے۔

19 سالہ کلیری جو آسٹریلیا کی خواتین بگ بیش لیگ میں پرتھ سکارچرز کی نمائندگی کرتی ہیں کو کرکٹ آسٹریلیا کی اینٹی کرپشن کوڈ کی خلاف ورزی کا مرتکب پایا گیا۔

کرکٹ آسٹریلیا کی انٹیگریٹی یونٹ کے سربراہ ائین روئے کا کہنا ہے کہ اگرچہ شرط پر لگائی جانے والی (7.60) برطانوی پاؤنڈ کی رقم چھوٹی دکھائی دیتی ہے تاہم اس سے کوئی فرق نہیں پڑتا۔

روئے کے مطابق ’ ہم کرکٹ کی ساکھ کے لیے اس کھیل میں کھلاڑیوں کی جانب سے کسی بھی قسم کے جوئے کے حوالے سے صفر عدم برداشت کی پالیسی پر قائم ہیں۔‘

پیئپا کلیری آسٹریلیا کی دوسری خاتون کرکٹر ہیں جن پر شرط لگانے کی وجہ سے پابندی عائد کی گئی ہے۔

اس سے قبل انگیلا ریکس نامی آسٹریلوی خاتون کرکٹر جو نیشنل کرکٹ لیگ میں اے سی ٹی میٹیورز کی جانب سے کھیلتی ہیں پر سنہ 2015 کے کرکٹ کے عالمی کپ کے دوران صرف نو آسٹریلین ڈالر (4.36) برطانوی پاونڈ کی شرط عائد لگانے پر دو سال کی پابندی عائد کی گئی تھی۔

کرکٹ آسٹریلیا کا یہ بھی کہنا ہے کہ کلیری کو 18 ماہ کی مذید پابندی کی سزا کا سامنا اس لیے بھی کرنا پڑا کیونکہ انھوں نے شرط لگانے سے صرف دو ماہ قبل اینٹی کرپشن ٹریننگ میں حصہ لیا تھا۔

اسی بارے میں