دھونی کمر میں تکلیف کی وجہ سے ایشیا کپ سے باہر

تصویر کے کاپی رائٹ AP
Image caption دھونی کی ورلڈ ٹی ٹوئنٹی میں شرکت بھی مشکوک ہے

بھارتی کرکٹ بورڈ نے کہا ہے کہ قومی کرکٹ ٹیم کے کپتان مہندر دھونی پیر کو معمول کی تربیت کے دوران کمر کے درد میں مبتلا ہونے کے بعد ایشیا کپ میں ٹیم کا حصہ نہیں ہوں گے۔

34 سالہ دھونی کی کمر کے پٹھوں میں اس وقت تکلیف شروع ہو گئی جب بنگلہ دیش میں بدھ سے شروع ہونے والے ایشیا کپ ٹی ٹوئنٹی کے ٹورنامنٹ کے لیے ٹیم پہلی جسمانی ورزش کر رہی تھی۔

انڈین کرکٹ کنٹرول بورڈ بی سی سی آئی نے پارتھیو پٹیل کو متبادل وکٹ کیپر کے طور پر پندرہ رکنی دستے میں شامل کیا ہے۔

تیس برس کے پٹیل نے آخری مرتبہ سنہ 2012 میں آسٹریلیا میں سہ فریقی ایک روزہ میچوں کے مقابلوں میں بھارت کی نمائندگی کی تھی۔

پریس ٹرسٹ آف انڈیا نے انڈین ٹیم کے میڈیا منیجر نشانت ارورا کے حوالے سے کہا ہے کہ پارتھیو کو احتیاطی طور پر بلایا گیا ہے۔

دھونی کے علاوہ بھارتی کرکٹ ٹیم کے تیز رفتار گیند باز محمد شامی بھی ایشیا کپ میں شرکت نہیں کر پائیں گے۔

محمد شامی پنڈلی میں کھنچاؤ کے بعد ٹیم سے باہر ہو گئے تھے اور اب تک وہ اس سے مکمل طور پر صحت یاب نہیں ہو پائے ہیں۔

کپتان دھونی کی کمرے میں تکلیف سے ٹیم کے بیٹنگ آڈر میں تبدیلی پر ٹیم کے اندر تشویش پائی جاتی ہے۔

اس کے علاوہ ایشیا کپ کے بعد ورلڈ ٹی ٹوئنٹی میں بھی ان کی شمولیت مشکوک ہے اور یہ ٹیم کے لیے اور بھی زیادہ باعث تشویش بات ہے۔

اسی بارے میں