گیل کا چھکوں کا ریکارڈ، ویسٹ انڈیز کی فتح

تصویر کے کاپی رائٹ ap
Image caption گیلز نے اس میچ میں ایک مرحلے پر تین لگاتار چھکے لگائے

چھکے اور اتنے اونچے اور اتنے دور، شائقیں کرکٹ کو ایک میچ میں اور کیا چاہیے۔

ممبئی میں کرس گیل نے انگلینڈ کے خلاف نہ صرف ورلڈ ٹی 20 کے میچ میں سب سے زیادہ چھکے لگانے کا ریکارڈ قائم کیا بلکہ اپنی ٹیم کو چھ وکٹوں سے فتح بھی دلوائی۔

کرس گیل ٹی 20 مقابلوں میں مجموعی طور پر سو سے زیادہ چھکے لگانے والے پہلے بلے باز بھی بن گئے۔

ویسٹ انڈیز نے بدھ کی شب کھیلے گئے میچ میں 183 کا بظاہر مشکل ہدف 19ویں اوور کی پہلی گیند پر عبور کر لیا۔

گیل نے انگلش بولروں کے چھکے چھڑا دیے اور 47 گیندوں پر ورلڈ ٹی 20 مقابلوں میں اپنی دوسری سنچری مکمل کی۔

گیارہ چھکوں کے علاوہ پانچ چوکے بھی ان کی اس اننگز کا حصہ تھے۔

ویسٹ انڈیز کی طرف سے کرس گیلز اور جونسن چارلس نے اننگز کا آغاز کیا لیکن جونسن کو ڈیوڈ ولی نے آؤٹ کر دیا۔ ان کا کیچ معین علی نے لیا۔

ابتدائی نقصان اٹھانے کے بعد ویسٹ انڈیز کے بلے بازوں نے سنبھل کر کھیلنا شروع کیا لیکن وہ گاہے بگاہے شاٹس بھی کھیلتے رہے۔

تصویر کے کاپی رائٹ Getty
Image caption الیکس ہیلز نے شروع میں احتیاط کے بعد ایک اوور میں تین چوکے لگائے۔

مارلن سیموئلز کا کیچ سٹروکس کی ایک گیند پر پکڑا گیا لیکن گیند کی اونچائی کی وجہ سے یہ نو بال قرار پائی۔ اس اوور میں سیموئلز نے تین چوکے لگائے۔

دوسرے اینڈ پر گیل خاموش یہ نظارہ دیکھ رہے تھے۔ اس وقت تک انھوں نے صرف چھ گیندوں کا سامنا کیا تھا۔

سیموئلز جو جارحانہ انداز میں کھیل رہے تھے وہ میچ کے ساتویں اوور میں عادل رشید کی گیند پر کیچ آؤٹ ہوئے۔ انھوں نے 27 گیندوں پر 37 رنز بنائے جس میں آٹھ چوکے شامل تھے۔

اس کے بعد دنیش رام دین کھیلنے آئے۔ میچ کے نویں اوور میں عادل رشید کی گیند پر گیل نے دو لگتار چھکے لگائے۔ ایک چھکا 98 میٹر اور دوسرا 86 میٹر کی دوری پر گرا۔ اس اوور میں مجموعی طور پر 16 رنز بنے۔

اس کے ساتھ ہی گیل کے ٹی ٹوئنٹی مقابلوں میں نیوزی لینڈ کے برینڈن میکلم کا 91 چھکوں کا ریکارڈ توڑ دیا۔

ٹی ٹوننٹی مقابلے

ویسٹ انڈیز کا ریکارڈ

  • کھیلے 76

  • جیتے 38

  • ہارے 36

  • بے نتیجہ 2

رام دین جو دوسرے اینڈ پر محتاط بیٹنگ کر رہے تھے معین علی کی گیند پر کیچ آؤٹ ہوئے۔

14ویں اوور میں گیلز نے معین علی کی بولنگ پر لگاتار تین چھکے لگائے۔

اس سے قبل میچ میں ویسٹ انڈیز نے ٹاس جیت کر انگلینڈ کو کھیلنے کی دعوت دی تھی۔

انگلینڈ کی طرف سے ایلکس ہیلز اور جیسن روائے نے اننگز کا آغاز کیا اور پہلے دو اوور میں بہت محتاط انداز اختیار کیے رکھا۔

میچ کے بعد بات کرتے ہوئے اندرے رسل نے کہا کہ وکٹ اچھی ہے اور وہ یہ سکور حاصل کر لیں گے۔

انھوں نے کہا کہ ان کی بیٹنگ اچھی ہے اور نمبر نو تک کھلاڑی بیٹنگ کر لیتے ہیں۔

انگلینڈ کی طرف سے جو روٹ نے سب سے اچھی بیٹنگ کی اور 36 گیندوں پر چار چوکوں اور دو شاندار چھکوں کی مدد سے 48 رنز بنائے۔

بٹلر نے 20 گیندوں تین چھکوں کی مدد سے 30 رنز بنائے۔ معین علی آخری میں کھیلنے آئے اور انہوں نے دو گیندوں میں ایک چھکے کی مدد سے سات رنز بنائے۔

ویسٹ انڈیز کی طرف سے جیروم ٹیلر نے پہلا اوور کرایا جب کہ دوسرا اوور سیموئل بدری نے کیا۔ ویسٹ انڈیز کی طرف سے چھ بولروں کو آزمایا گیا۔

تصویر کے کاپی رائٹ Getty
Image caption ہیلز نے ایک اوور میں تین چوکے لگائے

رسل اور براوو نے دو دو وکٹیں حاصل کئیں۔

پہلے دو اوورز احتیاط سے کھیلنے کے بعد انگلش بلے بازوں نے کھل کر کھیلنا شروع کیا اور بدری کو ان کے دوسرے اور میچ کے چوتھے اوور میں ہیلز نے تین چوکے لگائے۔

ویسٹ انڈیز نے پانچویں اوور میں بولنگ میں تبدیل کی اور آندرے رسل کوبولنگ کے لیے بلایا۔ جیسن روائے اندرے رسل کی ایک گیند پر آسان کیچ دے بیٹھے اور یوں انگلینڈ کو 37 کے مجموعی سکور پر پہلا نقصان اٹھانا پڑا۔

جیسن روائے نے 15 رن بنائے اور ان کی جگہ ، جو روٹ آئے اور انھوں نے چوکے سے اپنا کھاتہ کھولا۔

ڈوین براوو نے چھٹا اوور کیا اور اس سارے اوور میں انھوں نے گیند کی رفتار کم رکھی اور ڈھلی ڈھالی گیندوں میں انگلش بلے بازوں کو پھنسائے رکھا۔

پاور پلے کے اختتام پر انگلینڈ کو مجموعی سکور 49 رن تھا۔

میچ کے نصف اوور ختم ہونے پر انگلینڈ نے مجموعی طور پر 91 رنز بنائے تھے۔

ٹی ٹوئنٹی مقابلے

انگلینڈ ٹیم کا ریکارڈ

  • کھیلے 80

  • جیتے 37

  • ہارے 23

  • بے نتیجہ 4

میچ کے بارہویں اوور اور اپنے دوسرے اوور میں سلیمن بین آئے اور انھوں نے ہیلز کو بولڈ کر دیا۔

جاس بٹلر، ہیلز کے آؤٹ ہونے پر میدان میں آئے اور انھوں نے چودہویں اوور کی چوتھی گیند پر بدری کو چھکا لگایا۔

جو روٹ جو انگلینڈ کی بیٹنگ لائن میں بہت اہمیت رکھتے ہیں پندرہویں اوور میں آؤٹ ہو گئے۔ اس وقت مجموعی سکور 114 رنز تھا۔ ان کی جگہ کپتان اوئن مورگن کھیلنے آئے۔

سترہ اوور کے ختم ہونے پر انگلینڈ کے رنز بنانے کی رفتار آٹھ اعشاریہ تین تھی۔

انگلینڈ کی چوتھی وکٹ 152 رنز پر گری جب بٹلر براوو کی ایک گیند پر اونچ شاٹ کھیلتے ہوئے کیچ ہو گئے۔

اسی بارے میں