پاک انڈیا کرکٹ، ’بھارت میں تکبر کا عنصر نمایاں‘

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption عمران خان ورلڈ ٹی 20 میں پاکستان اور بھارت کے میچ کے موقع پر خصوصی طور پر کولکتہ مدعو کیے گئے تھے

پاکستانی کرکٹ ٹیم کے سابق کپتان اور تحریک انصاف کے سربراہ عمران خان کا کہنا ہے کہ پاک انڈیا دوطرفہ کرکٹ سیریز کو یقینی بنانے کے لیے انڈیا کو اپنا مثبت کردار ادا کرنا چاہیے۔

عمران خان ورلڈ ٹی 20 میں پاکستان اور انڈیا کے میچ کے موقع پر خصوصی طور پر کولکتہ مدعو کیے گئے تھے۔

اتوار کی صبح وطن واپس روانہ ہوتے ہوئے کولکتہ ائر پورٹ پر بی بی سی اردو سروس کو دیے گئے خصوصی انٹرویو میں عمران خان نے کہا کہ پاک انڈیا دوطرفہ سیریز کا انعقاد بہت ضروری ہے۔ یہ ایک بڑی کرکٹ ہے جس کا فائدہ دونوں کرکٹ بورڈز کو ہوگا۔

عمران خان کا کہنا تھا کہ انڈیای کرکٹ بورڈ پہلے ہی مالی طور پر مستحکم ہے لیکن زیادہ فائدہ پاکستان کی کرکٹ کو ہوسکتا ہے اور اس سے جو بھی پیسہ آئے گا وہ پاکستان کی ڈومیسٹک کرکٹ کو بہتر بنانے پر کام آسکتا ہے۔

عمران خان نے کہا کہ پاکستان نے دو طرفہ سیریز کے لیے ہمیشہ مثبت سوچ رکھی ہے اور قدم بڑھایا ہے لیکن انڈیا نے اس کا جواب مثبت نہیں دیا ہے اور چونکہ وہ ایک طاقتور ملک ہے لہذا اس میں تکبر کا عنصر بھی نمایاں ہے اور وہ اس معاملے میں رکاوٹ بنا ہوا ہے۔

عمران خان نے کہا کہ انڈیا کو آگے قدم بڑھانا چاہیے۔ پاکستان اور انڈیا کے درمیان کرکٹ کھیلنے سے دوریاں ختم ہوں گی اور دوستی بڑھے گی۔

عمران خان نے انڈیا کے خلاف پاکستانی ٹیم کی شکست پر مایوسی ظاہر کرتے ہوئے کہا کہ پاکستانی ٹیم نے اپنے ٹیلنٹ سے انصاف نہیں کیا۔ اگر یہ شکست مقابلہ کرکے ہوتی تو دکھ نہیں ہوتا لیکن یہ مقابلہ یکطرفہ رہا جو مایوس کن ہے۔

اسی بارے میں