پہلا سیمی فائنل: نیوزی لینڈ بمقابلہ انگلینڈ

تصویر کے کاپی رائٹ AFP

بھارتی دارالحکومت دہلی میں کھیلے جانے والےآئی سی سی ورلڈ ٹی ٹوئنٹی کے پہلے سیمی فائنل میں بدھ کو انگلینڈ اور نیوزی لینڈ کے درمیان میچ کھیلا جائے گا۔

نیوزی لینڈ کی ٹیم جو اب تک ہونے والے ورلڈ ٹی ٹوئنٹی مقابلوں میں کبھی فائنل نہیں جیت سکی ہے اس مرتبہ ٹورنامنٹ کی بہترین ٹیم نظر آ رہی ہے اور گروپ میچوں میں اس نے کوئی میچ نہیں ہارا ہے۔

نیوزی لینڈ نے اپنے گروپ کے پہلے ہی میچ میں دھرم شالا کی سپن وکٹ پر انڈیا کو باآسانی شکست دے کر اپنی دھاک جما لی تھی۔ اس کے بعد نیوزی لینڈ کی ٹیم پاکستان کو شکست دینے میں بھی کامیاب ہو گئی تھی اور وہ بھی ایک ایسے میچ میں جو ایک مرحلے میں کسی حد تک پاکستان کی گرفت میں جاتا نظر آ رہا تھا۔

ٹی ٹوئنٹی کرکٹ

نیوزی لینڈ کا ریکارڈ

92

کل میچ کھیلے

  • 46 میں فاتح

  • 44 میں شکست

  • 2 ٹائی فاتح

  • 3 ٹائی شکست

دوسری طرف انگلینڈ کی ٹیم نے سنہ 2010 میں پال کولنگ وڈ کی کپتانی میں ورلڈ ٹی ٹوئنٹی کی چیپمیئن ہونے کا اعزاز حاصل کر چکی ہے۔

انگلینڈ کی ٹیم اس ٹورنامنٹ میں اپنا پہلا ہی میچ ویسٹ انڈیز کے خلاف ہار گئی تھی لیکن اس نے جنوبی افریقہ جیسی مضبوط ٹیم کے خلاف 230 کا انتہائی مشکل ہدف عبور کر کے نہ صرف کامیابی حاصل کی بلکہ ثابت کیا کہ اسے کمزور ٹیم تصور نہ کیا جائے۔

میچ سے قبل انگلینڈ کے کپتان اوئن مورگن نے کہا کہ انگلینڈ کی موجودہ ٹیم ذہنی اعتبار سے انگلینڈ کی اسی ٹیم کی طرح ہے جس نے سنہ 2010 میں کولنگ وڈ کی کپتانی میں ٹی ٹوئنٹی کپ جیتا تھا۔

مورگن موجوہ ٹیم میں وہ واحد کھلاڑی ہی جو سنہ 2010 میں ورلڈ ٹیم ٹوئنٹی جیتی تھی۔

ٹی ٹوننٹی مقابلے

انگلینڈ کا ریکارڈ

  • کھیلے 86

  • جیتے 42

  • ہارے 39

  • ٹائی جیتے 1

  • بے نتیجہ 4

گروپ میچوں میں نیوزی لینڈ نے اپنے صف اول کے تیز رفتار گیند بازوں ٹرینٹ بولٹ اور ٹم ساؤدی کو گروپ میچوں میں استعمال نہیں کیا ہے۔ اطلاعات کے مطابق سیمی فائنل میں ان میں سے ایک کے ٹیم میں شامل ہونے کا قوی امکان ہے۔

کین ولیمسن نے میچ سے قبل کہا کہ وہ کھیلنے کے لیے پوری طرح تیار ہیں۔

انھوں نے کہا کہ میدان دیکھ کر انھوں نے اپنی ٹیم کا چناؤ کیا ہے اور سیمی فائنل میں بھی وہ حالات دیکھ کر اپنی بہترین ٹیم کا انتخاب کریں گے۔

اسی بارے میں