شین وارن آسٹریلوی ٹیم کے انتخاب سے ناخوش

تصویر کے کاپی رائٹ Getty
Image caption عثمان خواجہ نے اوپننگ کرتے ہوئے جارحانہ بلےبازی کا مظاہرہ کیا

آئی سی سی ورلڈ ٹی 20 کے مقابلوں میں شکست کھانے والی ٹیموں میں پاکستان وہ واحد ٹیم نہیں ہے جس پر کھلاڑیوں کے غلط انتخاب پر تنقید کی جا رہی ہے۔

آسٹریلیا کی ٹیم جو گروپ مرحلے کے ایک اہم میچ میں انڈیا سے شکست کھا کر ٹورنامنٹ سے باہر ہو گئی ہے اس پر سابق کرکٹر شین وارن نے کھلاڑیوں کے انتخاب کے حوالے سے شدید تنقید کی ہے۔

انڈیا کے خلاف جس آسٹریلوی ٹیم کو میدان میں اترا گیا اور جس ترتیب میں بلے بازوں کو بیٹنگ کے دوران بھیجا گیا اس پر تبصرہ کرتے ہوئے شین وارن نے کہا کہ بلے بازوں کی ترتیب یا بیٹنگ آرڈر غلط تھا۔ انھوں نے کہا کہ غلط فیصلے اور انتخاب آسٹریلوی ٹیم کی شکست کا باعث بنے۔

سٹیو سمتھ کی کپتانی میں کھیلنے والی آسٹریلوی ٹیم کا ورلڈ ٹی 20 ٹورنامنٹ جیتنے کا خواب انڈیا سے شکست کھانے کے بعد چکنا چور ہو گیا۔ آسٹریلیا کی ٹیم اب تک یہ اعزاز حاصل کرنے میں ناکام رہی ہے۔

تصویر کے کاپی رائٹ Reuters
Image caption شین وارن ایک ایسے لیگ سپنر تھے جنھیں کرکٹ کی تاریخ کبھی بھلا نہیں سکے گی

شہرہ آفاق سپنر شین وارن نے ایک مقامی ویب سائٹ کو انٹرویو دیتے ہوئے کہا کہ کہ ان کے خیال میں کھلاڑیوں کی سلیکشن درست نہیں تھی۔

انھوں نے مزید کہا کہ جیتنے کے لیے جو فارمولا کامیاب ثابت ہو چکا تھا اسے بلاضرورت بدلنے کی وجہ سے بھی ٹیم کی کارکردگی پر فرق پڑا۔

شین وارن نے اس بات کا بھی اعتراف کیا کہ تلخ سچائی یہ ہے کہ ٹیم اچھا نہیں کھیلی۔

وارن نے کہا کہ عثمان خواجہ کو نمبر تین پر بھیجا جانا چاہیے تھا اور آرون فنچ اور ڈیوڈ وارنر کی اوپننگ جوڑی کو نہیں توڑنا چاہیے تھا۔

آسٹریلیا نے انڈیا کے خلاف میچ میں عثمان خواجہ کو آرون فنچ کے ساتھ اوپننگ کرنے کے لیے بھیجا تھا جب کہ ڈیوڈ وارنر کو نمبر تین کی پوزیشن پر میدان میں اتارا گیا۔

اوپننگ جوڑی کو تبدیلی کرنے سے ٹیم کا توازن خراب ہو گیا اور اس سے کھلاڑیوں کی کارکردگی متاثر ہوئی۔ وارن نے یاد دلایا کہ وارنر فنچ کی جوڑی ایک عرصے سے اوپن کرتی آئی تھی اور اسی کو برقرار رکھا جانا چاہیے تھا۔ شین وان نے کہا چاہیے ٹی 20 میچ ہو یا ایک روزہ میچ ہو یہ جوڑی کامیاب ہوئی ہے اور اچانک اس میں تبدیلی سے ٹیم کا توازن بگڑ گیا۔

شین وارن نے جاس ہیزل وڈ کی سلیکشن پر بھی اعتراض کیا اور کہا کہ آل راؤنڈر جان ہیسٹنگ کو آخری دو میچوں میں نہ کھلانا بھی درست نہیں تھا۔

انھوں نے کہا ٹیم میں اس قدر باصلاحیت اور مہارت رکھنے والے کھلاڑی ہیں کہ ہو سکتا ہے سلیکٹروں نے سوچا ہو کہ وہ جن کھلاڑیوں کو بھی کھلائیں اس سے فرق نہیں پڑے گا اور ٹیم جیت جائے گی۔

اسی بارے میں