آسٹریلیا کے دورے تک کھیلنے کا ارادہ ہے: مصباح

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption مصباح الحق کا کہنا تھا کہ انھوں نے باقاعدہ تربیت شروع کر دی ہے

پاکستان کے ٹیسٹ کپتان مصباح الحق نے انگلینڈ کےخلاف ٹیسٹ سیریز کے بعد نیوزی لینڈ اور آسٹریلیا کا دورہ کرنے کا بھی عندیہ دے دیا ہے تاہم، ان کا کہنا ہے کہ اس کا انحصار ان کی فارم اور فٹنس پر ہو گا۔

بی بی سی کو انٹرویو دیتے ہوئے مصباح الحق نے کہا کہ وہ پاکستان سپر لیگ کے دوران ان فٹ ہوگئے تھے لیکن اب وہ فٹ ہیں۔

واضح رہے کہ پاکستان کرکٹ بورڈ کے چیئرمین شہریار خان کی درخواست پر مصباح الحق نے ٹیسٹ کرکٹ سے ریٹائرمنٹ موخر کرتے ہوئے اس سال انگلینڈ کا دورہ کرنے پر رضامندی ظاہر کر دی تھی۔

انگلینڈ کے دورے کے بعد پاکستان کو ستمبر اکتوبر میں ویسٹ انڈیز کی میزبانی کرنی ہے جس کے بعد پاکستانی ٹیم نیوزی لینڈ اور آسٹریلیا کے دورے پر جائے گی۔

مصباح الحق کا کہنا تھا کہ انہوں نے باقاعدہ تربیت شروع کر دی ہے اور اس ہفتے سے فیصل آباد میں شروع ہونے والے پاکستان کپ ون ڈے ٹورنامنٹ میں بھی حصہ لے رہے ہیں۔

انھوں نے کہا کہ انگلینڈ کا دورہ انتہائی اہم اور مشکل ہے اور اسی بات کو ذہن میں رکھتے ہوئے وہ مکمل تیاری کے ساتھ انگلینڈ جانا چاہتے ہیں۔ ان کے بقول ان کی کوشش ہے کہ کسی کاؤنٹی سے کھیلنے کا موقع مل جائے جس کے لیے ان کے مینیجر مختلف کاؤنٹیوں سے رابطے میں ہیں۔

مصباح الحق کا کہنا تھا کہ اگر ایسا نہ ہو سکا تو پھر وہ پاکستان اے کی طرف سے انگلینڈ کے دورے میں کم از کم ایک چار روزہ میچ ضرور کھیلیں گے۔

دلچسپ بات یہ ہے کہ مصباح الحق 61 ٹیسٹ میچ کھیلنے کے باوجود ابھی تک انگلینڈ میں کوئی ٹیسٹ نہیں کھیلے۔

مصباح الحق کا کہنا ہے کہ نیوزی لینڈ اور آسٹریلیا کا دورہ ان کے ذہن میں ہے، تاہم انگلینڈ کا دورہ بہت سخت آزمائش ہے اور اگر انگلینڈ کے دورے میں ان کی فارم اور فٹنس برقرار رہی تو پھر ان کے لیے ویسٹ انڈیز نیوزی لینڈ اور آسٹریلیا کے خلاف کھیلنا مشکل نہیں ہو گا۔

تصویر کے کاپی رائٹ Getty
Image caption مصباح الحق 61 ٹیسٹ کھیلنے کے باوجود ابھی تک انگلینڈ میں کوئی ٹیسٹ نہیں کھیلے

پاکستانی ٹیم کے نئے کوچ اور نئے چیف سلیکٹر کی تقرری کے بارے میں مصباح الحق نے کہا کہ تبدیلیوں سے فرق پڑتا ہے تاہم انھیں توقع ہے کہ یہ تبدیلیاں مثبت رہیں گی اور نئے کوچ کی فوری تقرری سے اتنا وقت مل جائےگا کہ وہ انگلینڈ کے اہم دورے کے لیے حکمت عملی تیار کر سکیں۔ ان کے خیال میں اس طرح چیف سلیکٹر کی تقرری سے انگلینڈ کے موسم اور وکٹوں سے مطابقت سلیکشن میں آسانی رہے گی۔

مصباح الحق نے ون ڈے انٹرنیشنل میں اپنی ممکنہ واپسی کو خارج از امکان قرار دیتے ہوئے کہا کہ ’ہمیں مستقبل کو ذہن میں رکھتے ہوئے آگے کی طرف بڑھنا چاہیے کیونکہ مختصر المیعاد منصوبہ بندی کبھی بھی مستقبل کو محفوظ نہیں بنا سکتی۔‘

یاد رہے کہ مصباح الحق نے گذشتہ سال ورلڈ کپ کے اختتام پر ون ڈے کرکٹ کو خیرباد کہہ دیا تھا۔

اسی بارے میں