بارسلونا کے سٹار کھلاڑیوں کو کیا ہوگیا ہے؟

تصویر کے کاپی رائٹ Getty
Image caption ایک مہینے کے اندر ہی بارسلونا کو 13 سال میں پہلی بار مسلسل تین مقابلوں میں شکست کا منہ دیکھنا پڑا

چیمپیئنز لیگ کے 16 مارچ کو ہونے والے مقابلے میں لوئس سواریز، نیمار اور میسی کے گول کے باعث بارسلونا نے آرسنل کی ٹیم کو باآسانی تین کے مقابلے میں ایک گول سے ہرا دیا تھا۔

میچ کے بعد فٹبال کے سابق کھلاڑی اور میچ کے پریزینٹرگیرے لینکر نے ٹویٹ کیا کہ ’بارسلونا نے بہت پُرلطف کھیل پیش کیا۔ خوبصورت کھیل میں تاریخ کی بہترین ٹیم کو دیکھا۔‘

اُن کے اِس جذباتی بیان کو سماجی رابطے کی ویب سائٹس پر بڑے پیمانے پر شیئر کیا گیا۔

آرسنل کے خلاف بارسلونا کی فتح، بغیر کسی شکست کے مسلسل 38ویں کامیابی تھی۔

لیکن ایک مہینے کے اندر ہی صورتحال نے ڈرامائی موڑ کرلیا اور بارسلونا کو 13 سال میں پہلی بار مسلسل تین مقابلوں میں شکست کا منھ دیکھنا پڑا۔

تصویر کے کاپی رائٹ Reuters
Image caption اینریکے کی ٹیم کے باقی پانچ مقابلوں کا پہلا میچ ڈیپورٹیو لا کورونا کی ٹیم کے خلاف بدھ کو کھیلا جائے گا

ٹیم کے مینیجر لوئس اینریکے کا کہنا ہے کہ قسمت کی خرابی کے باعث ٹیم زوال کا شکار ہے۔

گذشتہ 18 مہینوں کے دوران کھیلے جانے والے مقابلوں میں میسی سواریز اور نیمار نے بارسلونا کی فتح میں اہم کردار ادا کیا تھا، تینوں کھلاڑیوں نے آخری سیزن میں مشترکہ طور پر 122 گول کیے ہیں، اور ایک بار پھر یہ تعداد تین کا ہندسہ عبور کرچکی ہے۔

تاہم حالیہ میچوں میں تینوں کھلاڑی مؤثر کارکردگی کا مظاہرہ نہیں کرسکے اور میدان میں تینوں کھلاڑیوں کے درمیان رابطے کا فقدان محسوس کیاگیا ہے۔

سیزن کے آخری مرحلے کے مقابلوں میں بارسلونا کی شکست پر عام طور پر تھکاوٹ کا جواز پیش کیا جا رہا ہے۔

اتوار کے روز جس مقابلے میں بارسلونا کو ویلنسیا کے ہاتھوں شکست کا سامنا کرنا پڑا، یہ اِس ٹیم کا سیزن میں 56واں میچ تھا۔

تصویر کے کاپی رائٹ z
Image caption میسی نے والینسیا کے خلاف اپنے کریئر کا 500واں گول حاصل کیا لیکن سواریز اور نیمار کے ساتھ ان کی پارٹنرشپ اب اتنی مضبوط نہیں دکھائی دیتے جتنی کے سیزن کے شروع میں تھی

یورپ کی پانچ بڑی چیمپیئنز لیگوں میں فٹبال کلب ایتھلیٹک بِلباؤ کی ٹیم نے سب سے زیادہ میچز کھیلے ہیں۔

اگر اِن کا چیمیئنز لیگ کے سیمی فائنلسٹ ٹیموں سے مقابلہ کیا جائے تو مانچسٹر سٹی نے 52 اور بائرن میونخ نے 45 میچ کھیلے ہیں۔

یہی وجہ ہے کہ اتوار کو میچ کے بعد منعقدہ پریس کانفرنس میں صحافی نے ٹیم کے مینیجر اینریکے سے سوال کیا تھا کہ کیا ٹیم کی شکست کی وجہ تھکاوٹ تو نہیں ہے۔

اینریکے اور ٹیم کے دیگر کھلاڑیوں کے پاس بیٹھ کر خود پر افسوس کرنے کا وقت نہیں ہے، کیونکہ لا لیگا لیگ میں ٹیم کے باقی پانچ مقابلوں کا پہلا میچ ڈیپورٹو لا کورونا کی ٹیم کے خلاف بدھ کو کھیلا جائے گا۔

ٹورنامنٹ میں بارسلونا کے باقی میچ اُس کے لیے کافی آسانی لاسکتے ہیں، کیونکہ اُن کی مخالف تمام ٹیمیں نچلے درجے کی ٹیمیں ہیں۔

بارسلونا حالیہ فارم میں بھی ڈیپورٹو کے خلاف باآسانی فتح حاصل کرسکتا ہے۔

گذشتہ 33 مقابلوں ڈیپورٹیو کی ٹیم کے 17 میچ برابری پر ختم ہوئے ہیں، جس میں دسمبر میں بارسلونا کے گروانڈ نو کیمپ کی ٹیم کے خلاف دو دو گول سے برابری پر ختم ہونے والا میچ بھی شامل ہے۔

اپنے چھوٹے حریفوں کے حوالے سے فکر مندی اچھی بات ہے۔ تاہم بارسلونا کے ٹورنامنٹ کا انحصار اِس بات پر ہے کہ آیا وہ اپریل سے پہلی والی فارم بحال کرتے ہیں یا نہیں۔

اگر وہ اپنی فارم بحال کر پاتے ہیں تو اِن کو تمام کے تمام پانچ مقابلوں میں فتح حاصل کرنا ہوگی۔

تاہم اس وقت سب ’اگر مگر‘ کی کہانی ہے۔

اسی بارے میں