شہزاد کی کرکٹ بورڈ کو رویے میں بہتری کی یقین دہانی

تصویر کے کاپی رائٹ Getty
Image caption اس بات کے امکانات ہیں کہ احمد شہزاد کو معافی دے کر قومی کیمپ میں بلالیا جائے جو 14 مئی سے شروع ہونے والا ہے

پاکستانی کرکٹ ٹیم کے اوپننگ بیٹسمین احمد شہزاد نے پاکستان کرکٹ بورڈ کو خط تحریر کیا ہے جس میں مستقبل میں اپنے رویے میں بہتری لانے کی یقین دہانی کراتے ہوئے درخواست کی ہے کہ انھیں قومی کیمپ میں شامل کر لیا جائے۔

پاکستان کرکٹ بورڈ کے ذرائع نے بی بی سی کے استفسار پر اس بات کی تصدیق کی ہے کہ احمد شہزاد نے بورڈ سے رابطہ کیا ہے۔

واضح رہے کہ انضمام الحق کی سربراہی قائم سلیکشن کمیٹی نے دو مئی کو انگلینڈ کے دورے کی تیاری کے لیے قومی کیمپ کے اعلان کردہ 35 کھلاڑیوں میں احمد شہزاد اور عمراکمل کو شامل نہ کرنے کا فیصلہ کیا تھا۔

چیف سلیکٹر انضمام الحق نے دونوں کرکٹرز کو کیمپ میں شامل نہ کرنے کی وجہ ان کے ڈسپلن کے معاملات بتائے تھے اور یہ کہا تھا کہ سلیکشن کمیٹی ڈسپلن کو ہر قیمت پر اولین ترجیح دے گی تاہم اب تازہ ترین پیش رفت کے بعد اس بات کے امکانات ہیں کہ احمد شہزاد کو معافی دے کر قومی کیمپ میں بلالیا جائے جو 14 مئی سے شروع ہونے والا ہے ۔

یاد رہے کہ احمد شہزاد اور عمراکمل کے بارے میں سابق کوچ وقاریونس یہ کہتے ہوئے آئے تھے کہ دونوں کرکٹرز کے ڈسپلن کے معاملات درست نہیں ہیں ۔

وقاریونس نے سنہ 2015 کے عالمی کپ اور پھر حالیہ ورلڈ ٹی20 کی اپنی رپورٹ میں بھی دونوں کرکٹرز کے بارے میں ذکر کیا تھا۔

غور طلب بات یہ ہے کہ پاکستانی کرکٹ ٹیم کے منیجر انتخاب عالم نے بھی اپنی رپورٹ میں عمراکمل اور احمد شہزاد پر تنقید کی تھی۔

اسی بارے میں