ورسٹیپن فارمولا ون کی تاریخ کے کم عمر ترین فاتح

تصویر کے کاپی رائٹ Getty

ہالینڈ سے تعلق رکھنے والے میکس ورسٹیپن فارمولا ون کار ریسنگ کی تاریخ میں کوئی گراں پری ریس جیتنے والے سب سے کم عمر ڈرائیور بن گئے ہیں۔

ریڈ بل ٹیم کے ڈرائیور 18 سالہ ورسٹیپن نے یہ اعزاز اتوار کو سپینش گراں پری میں فتح کے نتیجے میں حاصل کیا۔

یہ فارمولا ون ریسنگ میں میکس کا دوسرا سیزن ہے اور وہ فارمولا ون گراں پری ریس جیتنے والے ہالینڈ کے پہلے شہری بھی بن گئے ہیں۔

بارسلونا میں منعقد ہونے والی سپینش گراں پری کے آغاز پر ہی مرسیڈیز کی ٹیم سے تعلق رکھنے والے دونوں فیورٹ ڈرائیورز نکو روزبرگ اور لوئیس ہیملٹن کی گاڑیاں آپس میں ٹکرا گئی تھیں اور وہ دونوں ریس سے باہر ہوگئے تھے۔

روز برگ اب تک رواں سیزن کی ہر ریس جیتتے آئے ہیں جبکہ ہیملٹن نے سپینش گراں پری کا آغاز پول پوزیشن سے کیا تھا۔

دو اہم ڈرائیورز کے نکل جانے کے بعد میکس کا مقابلہ فراری کے کمی ریکینن اور سباسچیئن ویٹل اور میکلارن کے فرنینڈو اولانزو سے تھا تاہم اولانزو بھی 45ویں چکر میں ریٹائر ہوگئے۔

تصویر کے کاپی رائٹ Getty
Image caption یہ فارمولا ون ریسنگ میں میکس کا دوسرا سیزن ہے

ریس کے آخری چکروں میں سخت مقابلہ دیکھنے کو ملا تاہم میکس نے مقررہ فاصلہ ایک گھنٹے 41 منٹ 40 سیکنڈ میں طے کر فتح حاصل کی۔

کمی ریکنن ایک سیکنڈ سے بھی کم فرق سے دوسرے جبکہ ویٹل تیسرے نمبر پر رہے۔

فتح کے بعد میکس کا کہنا تھا کہ ’یہ بہت شاندار احساس ہے۔ مجھے اب تک یقین نہیں آ رہا۔ وہ ایک شاندار ریس تھی۔‘

انھوں نے کہا کہ وہ اتنی شاندار کار فراہم کرنے پر اپنی ٹیم کے شکرگزار ہیں جبکہ ان کی کامیابی میں اہم ترین کردار ان کے والد کا ہے۔

میکس کی ٹیم ریڈ بل کے سربراہ کرسچیئن ہارنر نے کہا ہے کہ ’ہم بھی اتنے ہی حیران ہیں جتنے کہ آپ ہیں۔ پہلے ہی چکر میں مرسیڈیز کے دونوں ڈرائیورز کے باہر ہونے کے بعد ہمیں لگا تھا کہ ہمارے پاس موقع ہے لیکن میکس نے جو کام کر دکھایا ہے وہ ناقابلِ یقین ہے۔‘

اسی بارے میں