سپین میں میسی کےخلاف مقدمے کی سماعت شروع

Image caption میسی پر الزام ہے کہ انھوں نے امیج رائٹس سے حاصل ہونے والی آمدن کو بیرون ملک چھپا پانچ ملین ڈالر کا ٹیکس بچایا ہے

ارجنٹائن کے عالمی شہرت یافتہ فٹبالرلائنل میسی پر بیرون ملک اکاونٹ کھول کر ٹیکس بچانے کے الزام میں مقدمے کی کارروائی شروع ہو گئی ہے۔

مقدمے کی کارروائی کا آغاز 31 مئی کو سپین میں ہوا اور کارروائی تین روز تک جاری رہ سکتی ہے۔

نیمار کے خلاف فراڈ کا مقدمہ

میسی اور ان کے والد جارج پر الزام ہے کہ انھوں نے لیونل میسی کی تصاویر کے حقوق سے حاصل ہونے والی آمدن سے ہسپانوی حکام کو ٹیکس کی مد میں 50 لاکھ امریکی ڈالر ادا نہیں کیے۔

تصویر کے کاپی رائٹ Reuters
Image caption میسی کے والد پر الزام ہے کہ انھوں نے ہسپانوی حکام کو ٹیکس کی مد میں 50 لاکھ امریکی ڈالر ادا نہیں کیے

ٹیکس جمع کرنے والے محکمے کے وکلا نے عدالت سے دونوں ملزمان کو 22 ماہ قید کی سزا دینے کی درخواست کی ہے۔

استغاثہ کا کہنا ہے کہ جارج نے سنہ 2007 سے 2009 کے دوران اپنے بیٹے کی امیج رائٹس سے ہونے والی آمدن پر ٹیکس کی ادائیگی سے بچنے کے لیے بیلیز اور یوروگوئے میں رجسٹرڈ کمپنیوں کو استعمال کیا۔

لیونل میسی کے وکلا کا موقف رہا ہے کہ ان کےموکل نے’زندگی میں کبھی اپنے معاہدوں کو نہ تو پڑھا اور نہ ہی ان کا جائزہ لیا۔‘

میسی چار مرتبہ فیفا کے سال کے بہترین عالمی کھلاڑی رہ چکے ہیں اور ان کا شمار دنیا کے امیر ترین فٹبالروں میں ہوتا ہے۔

اگست 2013 میں میسی اور ان کے والد نے پچاس لاکھ یورو کی رقم ٹیکس کی عدم ادائیگی اور سود کی مد میں واپس کر چکے ہیں۔

میسی سے علاوہ بارسلونا کلب کے برازیلی فٹبالر نیمار کے خلاف بھی ٹیکس فراڈ کا مقدمہ چلانے کا امکان ہے۔

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption میسی سے علاوہ بارسلونا کلب کے برازیلی فٹبالر نیمار کے خلاف بھی ٹیکس فراڈ کا مقدمہ چلانے کا امکان ہے

اسی بارے میں