آخری گیند بہترین تھی: دھونی

تصویر کے کاپی رائٹ GETTY
Image caption دھونی 17 گیندوں میں 19 رنز بنا کر ناٹ آؤٹ رہے

زمبابوے کے خلاف پہلے ٹی - 20 میچ میں محض دو رنز سے شکست کے بعد انڈین ٹی ٹوئنٹی کے کپتان مہندر سنگھ دھونی نے زمبابوے کے بولر میدزیوا کی آخری گیند کو بہترین قرار دیا ہے۔

انڈین خبر رساں ایجنسی پی ٹی آئی کے مطابق میچ کے بعد دھونی نے کہا: ’آخیر میں مقابلہ بیٹ اور بال کے درمیان تھا اور مجھے لگتا ہے کہ وہ آخری گیند بہترین تھی۔‘

خیال رہے کہ دھونی کو دنیا کے بہترین فنشرز میں شمار کیا جاتا ہے اور شاید ہی کبھی ایسا ہو کہ وہ آخری اوورز میں کریز پر ہوں اور آٹھ مطلوبہ رنز حاصل نہ کرسکے ہوں۔

انھوں نے کہا: ’ہم اپنی پوری صلاحیت کے بروئے کار لاتے ہوئے نہیں کھیل سکے۔ کئی شاٹ تو پورے شاٹ بھی نہیں تھے، كیچ کی پریکٹس جیسے تھے۔ آپ ڈومسٹك کرکٹ میں چاہے بہتر کارکردگی کا مظاہرہ کر رہے ہوں لیکن جب آپ انڈیا اے ٹیم سے انڈیا کی (قومی) ٹیم میں جاتے ہیں تو دباؤ بہت بڑھ جاتا ہے۔ بیٹسمینوں نے کئی غلطیاں کیں۔۔۔ لیکن ان کے لیے سیکھنے کا موقع ہے۔ بولنگ میں لنتھ لائن درست نہیں تھی۔‘

خیال رہے کہ ان دونوں انڈین ٹیم ‌زمبابوے کے دورے پر ہے اور تین ون ڈے میچوں میں دھونی کی ٹیم نے کامیابی حاصل کی لیکن ٹی ٹوئنٹی میں زمبابوے فتح سے ہمکنار ہوئی۔

ٹی ٹوئنٹی میں یہ بھارت کے خلاف ان کی لگاتار دوسری کامیابی تھی۔

تصویر کے کاپی رائٹ AP
Image caption دھونی نے ٹیم کی بیٹنگ اور بالنگ پر تنقید کی

سنيچر کو پہلے کھیلتے ہوئے زمبابوے نے مقررہ 20 اوورز میں چھ وکٹوں کے نقصان پر 170 رنز بنائے تھے جس میں ای چیگمبورا 54 رنز کے ساتھ نمایاں سکورر تھے۔

انڈین ٹیم کو فتح کے لیے 171 رنز درکار تھے جبکہ آخری اوور میں صرف آٹھ رنز چاہیے تھے لیکن وہ صرف پانچ رنز بنا سکی۔

اس وقت کپتان مہندر سنگھ دھونی کریز پر تھے، لیکن آخری گیند پر میدزیوا نے انھیں چوکا لگانے کا موقع ہی نہیں دیا اور وہ ایک رن ہی بنا پائے۔ دھونی 17 گیندوں میں 19 رنز بنا کر ناٹ آؤٹ رہے تھے۔

تین میچ کی سیریز میں زمبابوے کو اس کامیابی کے ساتھ ایک صفر کی سبقت حاصل ہو گئی ہے۔

دوسرا میچ 20 جون کو جبکہ تیسرا اور آخری میچ 22 جون کو ہوگا۔

اسی بارے میں