میکسیکو:پولیس اور مظاہرین میں جھڑپیں 6 ہلاک

اپ کی ڈیوائس پر پلے بیک سپورٹ دستیاب نہیں

میکسیکو میں احتجاج کرنے والے اساتذہ اور پولیس کے درمیان ہونے والی جھڑپوں میں چھ افراد ہلاک ہوگئے ہیں۔

جھڑپوں کے نتیجے میں پولیس افسران سمیت 100 سے زیادہ افراد زخمی بھی ہوئے ہیں۔

میکسیکو کی ریاست اوکساکا میں اساتذہ گزشتہ ہفتے پولیس کی جانب سے بدعنوانی کے الزام میں دو یونین رہنماوں کی گرفتاری کے بعد سے احتجاج کر رہے ہیں۔

یونین ممبران نے شمالی میکسیکو میں مختلف سڑکیں بھی بلاک کر رکھی ہیں۔

حکام کے بقول پولیس سڑکیں کھلوانے کی کوشش کر رہی تھی کہ نامعلوم افراد افراتفری پھیلانے کے لیے پولیس اور احتجاج کرنے والوں پر فائرنگ کر دی۔

میکسیکو کے نیشنل سکیورٹی کمیشن کی جانب سے جاری کیے گئے بیان میں کہا گیا تھا کہ اس کارروائی میں شریک پولیس افسران مسلح نہیں تھے۔

تصویر کے کاپی رائٹ EPA

تاہم بعد میں پولیس سربراہ نے اعتراف کیا ہے کہ نامعلوم افراد کی جانب سے فائرنگ کے بعد مسلح افسران کو تعینات کیا گیا تھا۔

دوسری جانب میکسیکو کی نیشنل آئل کمپنی نے خبردار کیا ہے کہ اگر سڑکیں جلد نہ کھولی گئیں تو اُسے علاقے میں اپنی ریفائنری بند کرنی پڑے گی۔

خیال رہے کہ اساتذہ کی یونین سنہ 2013 میں حکومت کی جانب سے متعارف کروائی گئی اصلاحت کے خلاف احتجاج کر رہی ہے۔

حکومت کی جانب سے متعارف کروائی گئ اصلاحت میں اساتذہ کی کارکردگی جانچنے کا نیا طریقہ کار بھی وضح کیا گیا ہے۔

یونین ممبران کا کہنا ہے کہ ان کےرہنماوں پر لگائے جانے والا بدعنوانی کا الزام سیاسی ہے۔

اسی بارے میں