اولمپک ٹارچ ریلی سے فرار پر تیندوے کوگولی مار دی گئی

اپ کی ڈیوائس پر پلے بیک سپورٹ دستیاب نہیں

برازیل کی فوج کا کہنا ہے کہ میناس شہر کے ایک چڑیا گھر سے اولمپک ٹارچ ریلی میں شرکت کے لیے لائی جانے والی ایک مادہ تیندوے کو تھوڑی ہی دیر بعد گولی مار کر ہلاک کر دیا گیا ہے۔

فوج کے ترجمان کا کہنا ہے کہ مادہ تیندوا پیر کو ہونے والی ایک تقریب کے بعد فرار ہو گئی تھی جس کے بعد اس نے ایک فوجی پر حملہ کر دیا۔

* ریو میں آسٹریلوی ایتھلیٹ کو لوٹ لیا گیا

* ریو اولمپکس سے 50 روز قبل مالی ایمرجنسی کا اعلان

حکام کے مطابق جب بے ہوش کرنے والے چار تیر مادہ تیندوے کو روکنے میں ناکام ہو گئے جس کے بعد ایک فوجی نے اسے پستول سے گولی مار دی۔

تصویر کے کاپی رائٹ Reuters

ریو اولمپکس کے منتظمین کا کہنا ہے کہ اولمپک ٹارچ ریلی میں ایک جنگلی جانور کو استعمال کرنا غلطی تھی۔

دوسری جانب جانوروں کے حقوق کے لیے کام کرنے والے گروہوں نے اس واقعے کی مذمت کی ہے۔ ان میں سے کچھ نے یہ سوال بھی اٹھایا کہ اولمپک کے ایونٹ میں جانور کو کیوں ملوث کیا گیا؟

کیپٹو اینیمل لا انفورسمنٹ ایٹ پیپل فار دی ایتھیکل ٹریٹمنٹ آف اینیملز کے ڈائریکٹر بریٹینی پیٹ نے ایک بیان میں کہا’ ہم کب سیکھیں گے؟ جنگلی جانور کو یرغمال کرنے کے بعد انھیں ایسی حرکتیں کرنے پر مجبور کیا جاتا ہے جو خوفزدہ اور کبھی کبھی تکلیف دہ ہوتی ہیں۔‘

اس مادہ تیندوے کا نام ’جما‘ تھا اور اس کی پرورش ایمیزون کے چڑیا گھر میں کی گئی تھی۔

اسی بارے میں