پاکستان کی آٹھ وکٹیں گرگئیں، برتری281 رنز

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption اسد شفیق میچ میں اپنی دوسری نصف سنچری سکور نہ کر سکے

پاکستان اور انگلینڈ کے مابین لارڈز کےمیدان پر جاری پہلے ٹیسٹ کےتیسرے روز کھیل کے اختتام تک پاکستان نےآٹھ وکٹوں کے نقصان پر 214 رنز بنائے اور اس کی مجموعی برتری281 رنز ہو چکی ہے۔

ناٹ آؤٹ بیٹسمین یاسر شاہ 30 رنز اور محمد عامر صفر پر کھیل رہے ہیں۔

آؤٹ ہونے والےآخری کھلاڑی وہاب ریاض تھے جو بغیر کوئی رنز بنائے کرس ووکس کے ہاتھوں آؤٹ ہوئے۔

کرس ووکس نے اس میچ میں گیارہ وکٹیں حاصل کر چکے ہیں۔

٭ تیسرے روز کے کھیل کی تصویری جھلکیاں

٭ تفصیلی سکور کارڈ کے لیے کلک کریں

پاکستان کے آؤٹ ہونے والوں کھلاڑیوں میں سرفراز احمد 45، اسد شفیق 49، یونس خان 29، مصباح الحق 0، اظہر علی 23، محمد حفیظ 0 اور شان مسعود 24 شامل ہیں۔مصباح الحق آف سپنر معین علی کو چھکا لگانے کی کوشش میں باونڈری پر کیچ آؤٹ ہوگئے ۔

اس سے پہلے پاکستان نے ابتدائی 37 منٹ کے کھیل انگلینڈ کی بقیہ تین وکٹیں حاصل کیں اور اس طرح پاکستان کو 67 رنز کی برتری حاصل ہو گئی۔ فاسٹ بولر وہاب ریاض اور سپنر یاسر شاہ کے حصے میں ایک ایک وکٹ آئی۔ انگلینڈ کے ایک کھلاڑی رن آؤٹ ہوئے۔

تیسرے روز جب انگلینڈ نے جب اپنی اننگز کا آغاز کیا تو پاکستان کو ابتدائی اووروں میں کامیابی حاصل ہو گئی ۔ وہاب ریاض نے ناٹ آؤٹ بیسٹمین سٹیو براڈ کو بولڈ کر کے میچ میں پہلی وکٹ حاصل کی ہے۔ یاسر شاہ نے سٹیفن فن کو ایل بی ڈبلیو آؤٹ کیا جبکہ آخری کھلاڑی جیک بال رن آؤٹ ہو گئے۔کرس ووکس35 رنز کے سات ناٹ آؤٹ رہے۔

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption سرفراز احمد نے عمدہ بیٹنگ کی

گذشتہ روز میچ کے اختتام پر انگلینڈ نے پاکستان کے 339 رنز کے جواب میں 253 رنز بنائے تھے اور اس کی سات وکٹیں گر چکی تھیں۔

پاکستان کی جانب سے یاسر شاہ سب سے کامیاب بولر رہے۔ یاسر شاہ نے 29 اووروں میں صرف 70 رنز دے کر چھ وکٹیں حاصل کیں۔ یاسر شاہ نے کی عمدہ بولنگ نے پاکستان کو مضبوط پوزیشن میں لاکھڑا کیا ہے۔

تصویر کے کاپی رائٹ AFP

یاسر شاہ پہلے لیگ سپنر ہیں جنھوں نےگذشتہ 20 برسوں میں لارڈز کے میدان میں پہلی بار ایک اننگز میں پانچ وکٹیں حاصل کی ہیں۔ پچھلی بار پاکستانی لیگ سپنر مشتاق احمد نے لارڈز میں پانچ وکٹیں حاصل کی تھیں۔

اسی بارے میں