’شین وارن کے بعد یاسر شاہ بہترین لیگ سپنر‘

تصویر کے کاپی رائٹ PA
Image caption لارڈز ٹیسٹ میں بین سٹوکس انجری کے باعث شرکت نہیں کر سکے تھے

انگلینڈ کرکٹ ٹیم کے آل راؤنڈر بین سٹوکس کا کہنا ہے کہ یاسر شاہ ’شین وارن کے بعد سب سے بہترین لیگ سپنر ہیں۔‘

30 سالہ یاسر شاہ نے لارڈز ٹیسٹ میں مجموعی طور پر 141 رنز کے عوض دس کھلاڑیوں کو آؤٹ کیا تھا اور اس میچ میں پاکستان نے 75 رنز سے کامیابی میں اہم کردار ادا کیا تھا۔

خیال رہے کہ لارڈز ٹیسٹ میں بین سٹوکس اور جیمز اینڈرسن شرکت نہیں کر سکے تھے اور جمعے کو اولڈ ٹریفورڈ میں شروع ہونے والے دوسرے ٹیسٹ میچ کے لیے دونوں کو سکواڈ میں شامل کیا گیا ہے۔

بین سٹوکس کا کہنا ہے کہ ’پاکستان بہت اچھی ٹیم ہے لیکن ہم یہ ٹیسٹ یہ جانتے ہوئے کھیلیں گے کہ وہ کیسے بولنگ کرواتے ہیں اور ہمارے پاس اس کا توڑ ہونا چاہیے۔‘

تصویر کے کاپی رائٹ Getty
Image caption یاسر شاہ نے لارڈز ٹیسٹ میں مجموعی طور پر دس کھلاڑیوں کو آؤٹ کیا تھا

واضح رہے کہ یاسر شاہ 13 ٹیسٹ میچوں میں 86 وکٹیں حاصل کر چکے ہیں اور ٹیسٹ بولنگ رینکنگ میں 11 سال بعد شین وارن کے بعد کسی لیگ سپنر نے اول پوزیشن حاصل کی ہے۔

آسٹریلیا سے تعلق رکھنے والے شین وارن سنہ 2007 میں ٹیسٹ کرکٹ سے ریٹائر ہوگئے تھے اور انھوں نے اپنے ٹیسٹ کیریئر میں 145 میچ کھیل کر 708 وکٹیں حاصل کی تھیں۔

25 سالہ بین سٹوکس مئی میں سری لنکا کے خلاف کھیلے گئے پہلے ٹیسٹ میچ میں گھٹنے کی انجری کا شکار ہوگئے تھے۔

گذشتہ دنوں اپنی کاؤنٹی ڈرہم کی طرف سے کھیلتے ہوئے انھوں نے لنکاشائر کے خلاف ایک میچ کی دوسری اننگز میں 19 اووز کروائے اور تین وکٹیں حاصل کی تھیں۔

تصویر کے کاپی رائٹ AP
Image caption شین وارن نے اپنے ٹیسٹ کیریئر میں 145 میچ کھیل کر 708 وکٹیں حاصل کی تھیں

وہ کہتے ہیں کہ ’میں نیٹس میں بولنگ کرواتا رہا تھا لیکن میچ کے دوران بولنگ کروانے کا کوئی متبادل نہیں ہے۔اس سے میرے اعتماد میں بے پناہ اضافہ ہوا ہے۔ ‘

جب ان سے پاکستان کے خلاف ٹیسٹ سیریز کے بارے میں پوچھا گیا تو ان کا کہنا تھا کہ ’ایک شکست ہوئی ہے۔ ہم اس کو تین میچوں کی سیریز کے طور پر دیکھ رہے ہیں اور امید کرتے ہیں کہ ہم یہ جیت سکتے ہیں۔‘

اسی بارے میں