’پاکستان اے ٹیم کے کرکٹرز کو ون ڈے میں موقع ملے گا‘

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption عمراکمل اور احمد شہزاد کو ون ڈے ٹیم میں شامل نہ کرنے کا فیصلہ کیا جاچکا ہے جبکہ ٹی ٹوئنٹی ٹیم میں شاہد آفریدی کو شامل کیے جانے کا بھی کوئی امکان نہیں ہے

پاکستان کی قومی سلیکشن کمیٹی نے اے ٹیم کے تین چار کھلاڑیوں کو انگلینڈ کے خلاف ون ڈے کرکٹ سیریز کے لیے پاکستانی سکواڈ میں شامل کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔

پاکستان اور انگلینڈ کے درمیان پانچ ون ڈے انٹرنیشنل میچوں کی سیریز چوبیس اگست سے کھیلی جائے گی۔ اس کے علاوہ پاکستانی ٹیم آئرلینڈ کے خلاف بھی دو ون ڈے انٹرنیشنل میچ کھیلے گی۔

پاکستان اے کرکٹ ٹیم کے دورۂ انگلینڈ میں چند کھلاڑیوں نے اچھی کارکردگی کا مظاہرہ کیا ہے اور سلیکشن کمیٹی کے ذرائع کے مطابق انضمام الحق کی سربراہی میں قائم کمیٹی اس ٹیم کے کم ازکم تین سے چار کھلاڑیوں کو انگلینڈ کے خلاف ون ڈے سیریز میں موقع دینا چاہتی ہے۔

پاکستان اے ٹیم کے دورۂ انگلینڈ میں کھیلی گئی سہ فریقی ون ڈے سیریز میں شرجیل خان، مجاہد علی اور کپتان بابر اعظم کی بیٹنگ میں کارکردگی اچھی رہی جبکہ کاؤنٹیوں کے خلاف میچوں میں حسن علی اور محمد نواز نے عمدہ آل راؤنڈ کارکردگی کا مظاہرہ کیا ہے۔

چیف سلیکٹر انضمام الحق ان دنوں انگلینڈ میں ہیں جہاں انھوں نے پاکستان اے ٹیم کےمیچز میں تمام کھلاڑیوں کی کارکردگی کو خود دیکھا ہے جس کے بعد انھوں نے اولڈ ٹریفرڈ میں پاکستانی کرکٹ ٹیم کے کوچ مکی آرتھر اور ون ڈے کپتان اظہرعلی سے ٹیم کے سلیکشن کے بارے میں بات کی۔

ڈسپلن پر ٹیم سے باہر کیے جانے والے عمر اکمل اور احمد شہزاد کو ون ڈے ٹیم میں شامل نہ کرنے کا فیصلہ کیا جا چکا ہے جبکہ ٹی 20 ٹیم میں شاہد آفریدی کو شامل کیے جانے کا بھی کوئی امکان دکھائی نہیں دیتا۔

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption پاکستان اے کرکٹ ٹیم کے دورۂ انگلینڈ میں چند کھلاڑیوں نے اچھی کارکردگی کا مظاہرہ کیا ہے

شاہد آفریدی نے ورلڈ ٹی 20 مقابلوں سے قبل کہا تھا کہ وہ اس عالمی مقابلے کے بعد کرکٹ کو خیرباد کہہ دیں گے لیکن بعد میں انھوں نے بین الاقوامی کرکٹ جاری رکھنے کی خواہش ظاہر کی تھی۔

پاکستان اور انگلینڈ کے درمیان تیسرا ٹیسٹ میچ تین سے سات اگست تک ایجبسٹن میں کھیلا جائے گا جس کے بعد ون ڈے سیریز کے لیے سکواڈ کا اعلان کر دیا جائے گا۔

چیف سلیکٹر انضمام الحق کی تجویز پر یکم اگست سے نیشنل کرکٹ اکیڈمی لاہور میں ایک کیمپ بھی لگایا جارہا ہے جس میں پاکستان اے ٹیم کے کھلاڑیوں کے علاوہ فاسٹ بولرز عمرگل اور جنید خان کو بھی بلایا جائے گا تاکہ اکیڈمی کے کوچز ان دونوں بولرز کی فٹنس اور کارکردگی کو دیکھ سکیں۔

یہ دونوں فاسٹ بولرز فٹنس مسائل سے دوچار ہونے کے بعد سے پاکستانی ٹیم میں جگہ بنانے کی تگ ودو میں مصروف ہیں۔

واضح رہے کہ عمرگل نے گذشتہ روز ایک انٹرویو میں ٹیم میں منتخب نہ ہونے پر سخت مایوسی ظاہر کی تھی اور کہا تھا کہ وہ مکمل فٹ ہیں۔

اس ضمن میں انھوں نے انضمام الحق سے بھی بات کی تھی جس کے بعد انھیں اس کیمپ میں بلانے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔

اسی بارے میں