دوسرے دن کی آخری گیند پر اظہر علی 139 رنز پر آؤٹ

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption اظہر علی اس بار ایک بڑی اننگز کھیلنے میں کامیاب ہوئے اور اپنی سنچری سکور کی

برمنگھم میں انگلینڈ کے خلاف تیسرے کرکٹ ٹیسٹ میچ کے دوسرے دن کھیل کے اختتام پر پاکستان نے اظہر علی اور سمیع اسلم کی عمدہ بلے بازی کی بدولت 257 رنز بنا لیے تھے۔

پاکستان کو انگلینڈ کی پہلی اننگز کی برتری ختم کرنے کے لیے مزید 42 رنز درکار ہیں جبکہ اس کی سات وکٹیں ابھی باقی ہیں۔

جمعرات کو اظہر علی 139 رنز بنا کر دن کی آخری گیند کیچ آؤٹ ہوگئے جبکہ یونس خان 21 رنز پر ناٹ آؤٹ رہے۔

٭ میچ کا تفصیلی سکور کارڈ

٭ایجبیسٹن ٹیسٹ کے دوسرے دن کی تصاویر

٭ پہلے دن کا کھیل، آرٹ فلم یا فارمولا؟

انگلینڈ کی جانب سے جیمز اینڈرسن اور کرس ووکس نے ایک ایک وکٹ حاصل کی۔

اظہر علی نے 209 گیندوں پر دس چوکوں اور ایک چھکے کی مدد سے اپنی دسویں سنچری مکمل کی اور میدان پر مصباح الحق کی طرح ڈنڈ نکال کر خوشی کا اظہار کیا۔

سمیع اسلم نے اپنی پہلی نصف سنچری سکور کی اور 82 رنز کی عمدہ اننگز کھیلنے کے بعد رن آؤٹ ہوگئے۔ انھوں نے اظہر علی کے ساتھ مل کر دوسری وکٹ کی شراکت میں 181 رنز بنائے۔

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption سیریز میں اپنا پہلا ٹیسٹ کھیلنے والے سمیع اسلم اپنی پہلی نصف سنچری سکور کرنے میں کامیاب رہے

کھانے کے وقفے کے بعد پاکستان نے اپنی اننگز کا دوبارہ آغاز کیا تو جیمز اینڈرسن کے پہلے ہی اوور میں جو روٹ نے سلپ میں اظہر علی کا کیچ چھوڑ دیا۔

پاکستان کی جانب سے سمیع اسلم اور محمد حفیظ نے اننگز کا آغاز کیا تو محمد حفیظ پہلے ہی اوور میں بغیر کوئی رن بنائے جیمز اینڈرسن کی گیند پر کیچ ہوگئے۔

اس سیریز کے دوران حفیظ کوئی بھی بڑی اننگز کھیلنے میں ناکام رہے ہیں اور اس میچ سے قبل بھی ان کی سلیکشن پر اعتراضات سامنے آئے تھے۔

انگلینڈ کی ٹیم میچ کے پہلے دن اپنی پہلی اننگز میں 297 رنز بنا کر آؤٹ ہوگئی تھی۔

میزبان ٹیم کی جانب سے گیری بیلنس اور معین علی نے نصف سنچریاں بنائیں۔ بیلنس 70 جبکہ معین علی 63 رنز بنا کر آؤٹ ہوئے۔

ان کے علاوہ الیسٹر کک نے 45 رنز کی اننگز کھیلی۔

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption اس سیریز کے دوران حفیظ کوئی بھی بڑی اننگز کھیلنے میں ناکام رہے ہیں

پاکستان کی جانب سے پانچ برس کے وقفے کے بعد ٹیسٹ ٹیم میں جگہ بنانے والے سہیل خان 96 رنز کے عوض پانچ وکٹیں حاصل کر کے سب سے کامیاب بولر رہے۔

ان کے علاوہ محمد عامر اور راحت علی نے دو، دو جبکہ یاسر شاہ نے ایک وکٹ لی تھی۔

پاکستان نے اس میچ کے لیے ٹیم میں دو تبدیلیاں کی ہیں اور شان مسعود اور وہاب ریاض کی جگہ سمیع اسلم اور سہیل خان کو ٹیم کو جگہ دی گئی ہے۔

انگلینڈ کی ٹیم میں زخمی ہونے والے آل راؤنڈر بین سٹوکس کی جگہ سٹیون فن کی واپسی ہوئی ہے۔

بین سٹوکس پنڈلی میں تکلیف کی وجہ سے پہلا ٹیسٹ بھی نہیں کھیل پائے تھے اور اب انگلینڈ اینڈ ویلز کرکٹ بورڈ کے حکام کا کہنا ہے کہ وہ چوتھے ٹیسٹ میں بھی شریک نہیں ہو سکیں گے۔

اسی بارے میں