ریو اولمپکس میں پاکستانی جوڈو کھلاڑی دوسرے راؤنڈ میں باہر

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption 22 سالہ شاہ حسین شاہ کو براعظمی کوٹے کی بنیاد پر اولمپکس میں شرکت کا موقع ملا تھا

ریو میں جاری اولمپکس میں جوڈو کے مقابلے میں پاکستانی کھلاڑی شاہ حسین شاہ اپنی پہلی ہی فائٹ میں شکست کھا کر باہر ہوگئے ہیں۔

شاہ حسین شاہ کو 100 کلوگرام کے مقابلے کے پہلے راؤنڈ میں مخالف کھلاڑی کی عدم شرکت کی وجہ سے ’بائی‘ ملی تھی۔

جمعرات کو دوسرے راؤنڈ میں انھیں یوکرینی کھلاڑی آرتم بلوشنکو نے دلچسپ مقابلے کے بعد شکست دی۔

22 سالہ شاہ حسین شاہ کو براعظمی کوٹے کی بنیاد پر اولمپکس میں شرکت کا موقع ملا تھا۔

تصویر کے کاپی رائٹ Reuters

خیال رہے کہ شاہ حسین کے والد باکسر حسین شاہ نے سنہ 1988 میں سیول اولمپکس میں کانسی کا تمغہ جیتا تھا اور وہ اولمپکس مقابلوں میں انفرادی کھیلوں میں تمغہ جیتنے والے آخری پاکستانی کھلاڑی ہیں۔

ریو روانگی سے قبل بی بی سی اردو سروس کو دیے گئے انٹرویو میں شاہ حسین شاہ نے کہا تھا کہ انھوں نے اولمپکس کے لیے بھرپور تیاری کی ہے اور انھیں اچھے نتائج کی امید ہے۔

جوڈو کا کھیل اپنانے کی وجہ بتاتے ہوئے شاہ حسین کا کہنا تھا کہ یہ کھیل دوسروں کی عزت کرنا سکھاتا ہے۔

شاہ حسین شاہ ابھی سے 2020 کے اولمپکس پر نظریں لگائے ہوئے ہیں جو ان کے شہر ٹوکیو میں منعقد ہوں گے۔

اسی بارے میں