اوول ٹیسٹ پاکستان کے نام، ٹیسٹ سیریز برابر

تصویر کے کاپی رائٹ
Image caption پاکستان نے مطلوبہ ہدف بغیر کسی نقصان کے حاصل کر لیا

پاکستان نے اوول ٹیسٹ میں انگلینڈ کو دس وکٹوں سے شکست دے کر چار ٹیسٹ میچوں کی سیریز دو دو سے برابر کر دی ہے۔

اوول ٹیسٹ میچ کے چوتھےروز پاکستان کے خلاف انگلینڈ نے دوسری اننگز میں 253 رنز بناتے ہوئے پاکستان کو جیت کے لیے 40 رنز کا آسان ہدف دیا تھا جو پاکستان نے بغیر کسی نقصان کے حاصل کر لیا۔

اوپنر سمیع اسلم اور اظہر علی نے بالترتیب 12 اور 30 رنز بنائے۔

مین آف دی میچ کا ٹائٹل یونس خان کو ملا جبکہ پاکستان کی جانب سے مین آف دی سیریز کا اعزاز مصبالح الحق اور انگلینڈ کی جانب سے کرس ووکس نے حاصل کیا۔

٭ میچ کا تفصیلی سکور کارڈ

٭تیسرے دن میچ کا پورا نقشہ بدل گیا

٭ پاکستان کی اننگز تصاویر میں

تصویر کے کاپی رائٹ
Image caption یاسر شاہ نے دوسری اننگز میں انگلینڈ کے پانچ کھلاڑیوں کو آؤٹ کیا

اس سے قبل انگلینڈ کے آخری آؤٹ ہونے والے بیٹسمین جیمز اینڈرسن تھے جو افتخار احمد کی گیند پر ایل بی ڈبلیو ہوئے۔

انگلینڈ کے نویں کھلاڑی سٹورٹ براڈ یاسر شاہ کا گیند پر یونس خان کے ہاتھوں کیچ آؤٹ ہوئے۔

جانی بیر سٹو انگلینڈ کے آؤٹ ہونے والے آٹھویں کھلاڑی تھے۔ بیر سٹو 81 رنز بنا ئے اور وہاب ریاض کی گیند پر اظہر علی ان کا کیچ لیا۔

کھانے وقفے کے بعد میزبان ٹیم کی ساتویں وکٹ اس وقت گری جب وہاب ریاض نے کرس ووکس کو رن آؤٹ کر دیا۔

انگلینڈ کے آؤٹ ہونے والے چھٹے کھلاڑی معین علی کو یاسر شاہ نے لنچ سے کچھ دیر قبل آؤٹ کیا۔

معین علی 32 رنز بنا کر یاسر شاہ کی گیند پر کیپر کے ہاتھوں کیچ آؤٹ ہوئے۔

یاسر شاہ نے دوسری اننگز میں انگلینڈ کے پانچ کھلاڑیوں کو آؤٹ کیا ہے۔ جـبکہ پہلی اننگز میں وہ کوئی وکٹ نہیں لے سکے تھے۔

تصویر کے کاپی رائٹ
Image caption بیر سٹو دن کے آغاز سے ہی پر اعتماد بیٹنگ کر رہے ہیں اور اپنی نصف سینچری مکمل کر چکے ہیں

آج آؤٹ ہونے والے پہلے بیٹسمین گیری بیلنس سہیل خان کا شکار بنے۔ بیلنس سہیل خان کی باہر جاتی ہوئی بال پر شاٹ کھیلنے کی کوشش میں وکٹ کے پیچھے کیچ آؤٹ ہوئے۔

انگلینڈ نے کیھل کے تیسرے دن کے اختتام چار وکٹوں کے نقصان پر 88 رنز بنائے تھے اور اسے پاکستان کی پہلی اننگز کی برتری کو ختم کرنے کے لیے 126 رنز کی ضرورت تھی۔

٭ پاکستان چھ برس بعد انگلینڈ میں: خصوصی ضمیمہ

انگلینڈ کے آؤٹ ہونے والے کھلاڑیوں میں جو روٹ، ایلکس ہیلز، الیسٹر کک اور جیمز ونس شامل ہیں۔

یاسر شاہ نے انتہائی عمدہ بولنگ کرتے سات اووروں میں صرف پندرہ رنز دے کر تین وکٹیں حاصل کیں۔

وہاب ریاض نے الیسٹر کک کو آؤٹ کر کے پاکستان کی پہلی بڑی کامیابی دلائی۔ وہاب ریاض نے اپنے بولنگ سپیل کا آغاز انتہائی برق رفتاری سے کیا۔ البتہ امپائر نے وہاب ریاض کو پچ کے خطرناک حصے میں جانے کی وجہ سے ایک وارننگ دی تھی۔

آج پھر وہاب ریاض کو امپائر نے پچ کے خطرناک حصے میں جانے کی وجہ سے ایک اور وارننگ دی ہے۔

خیال رہے کہ مزید وارننگ کی صورت میں وہ اس اننگز میں مزید بولنگ نہیں کر سکیں گے۔

اس سے پہلے پاکستان کی پوری ٹیم 542 رنز بنا کر آؤٹ ہوگئی تھی اور پاکستان کو پہلی اننگز میں 214 رنز کی برتری حاصل ہوئی ۔ پاکستان کی جانب سے یونس خان نے اپنے کریئر کی چھٹی ڈبل سنچری سکور کی۔ یونس خان 218 رنز بنا کر جیمز اینڈرسن کی گیند پر ایل بی ڈبلیو قرار پائے۔

آخری آؤٹ ہونے والے کھلاڑی سہیل خان تھے۔ فاسٹ بولر محمد عامر نے بھی اپنے کریئر کا سب سے زیادہ 39 رنز سکور کر کے ناٹ آؤٹ رہے۔

اسی بارے میں