یوسین بولٹ نے تاریخ رقم کر دی

تصویر کے کاپی رائٹ Getty
Image caption یوسین بولٹ سنہ 2008 کے بیجنگ اور 2012 کے لندن اولمپکس میں 100 میٹر، 200 میٹر اور 4x100 میٹر کی دوڑ میں گولڈ میڈل جیت چکے ہیں

جمیکا کے ایتھلیٹ یوسین بولٹ نے اولمپکس میں اپنا نواں اور برازیل کے شہر ریو میں جاری مقابلوں میں اپنا تیسرا طلائي تمغہ جیت لیا ہے۔

انھوں نے تیسرا تمغہ 4x100 ریلے دوڑ میں حاصل کیا۔

٭ بولٹ کا ریو میں دوسرا، اولمپکس میں آٹھواں طلائی تمغہ

٭ 100 میٹر کی دوڑ، اولمپکس کے سر کا تاج

29 سالہ بولٹ نے ریو میں اس سے قبل 100 اور 200 میٹر کا تمغہ حاصل کر رکھا تھا۔

اس طرح وہ تاریخ میں پہلے شخص ہیں جنھوں نے لگاتار ان تینوں مقابلوں میں طلائی تمغہ حاصل کیا ہے۔

ریس جیتنے کے بعد بولٹ کا کہنا تھا کہ ’ یہ لیجیے اب میں عظیم ترین رنر بن گیا ہوں۔‘

لگاتار تین اولمپکس میں طلائی تمغے جیتنے کے بارے میں بی بی سی سپورٹس سے بات کرتے ہوئے بولٹ کا کہنا تھا کہ ’ میں نے کبھی سوچا نہیں تھا کہ ایسا ہوگا، یہ ایک طویل سفر تھا، میں خوشی کے ساتھ سکون بھی محسوس کر رہا ہوں۔‘

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption امریکہ کے کارلوئیس نے 1984، 1988، 1992 اور 1996 کے مقابلوں میں حصہ لے کر نو طلائی کے تغمے اپنے نام کیے

انھوں نے جمیکا کے دوسرے رنرز اوصافا پاول، یوہان بلیک اور نکل ایشمیڈا کے ساتھ 4x100 میٹر دوڑ 37.27 سیکنڈ میں مکمل کی۔

اس مقابلے میں جاپان نے امریکہ کی ٹیم کو شکست دے کر حیرت انگیز طور پر چاندی کا تمغہ حاصل کیا۔

اس سے قبل یوسین بولٹ سنہ 2008 کے بیجنگ اور 2012 کے لندن اولمپکس میں 100 میٹر، 200 میٹر اور 4x100 میٹر کی دوڑ میں گولڈ میڈل جیت چکے ہیں۔

خیال رہے اولمپکس مقابلوں میں اب تک یوسین بولٹ کے علاوہ صرف دو دیگر ایتھلیٹس نو طلائی تمغے جیت سکے ہیں۔

فن لینڈ کے پاوہ نرمی نے سنہ 1920، 1924 اور 1928 کے مقابلوں میں کل نو طلائی کے تغمے جیتے جبکہ امریکہ کے کارلوئیس نے 1984، 1988، 1992 اور 1996 کے مقابلوں میں حصہ لے کر نو طلائی کے تغمے اپنے نام کیے۔

بولٹ نے فروری میں کہا تھا کہ وہ سنہ 2017 میں ہونے والی عالمی چیمپیئن شپ کے بعد ریٹائرمنٹ لے لیں گے۔

اسی بارے میں