دوسرا میچ جیت کر سیریز بھی پاکستان کے نام

  • عبدالرشید شکور
  • بی بی سی اردو ڈاٹ کام، کراچی
شعیب ملک اور کپتان سرفراز احمد نے بھی نصف سنچری شراکت قائم کی

،تصویر کا ذریعہGetty

،تصویر کا کیپشن

شعیب ملک اور کپتان سرفراز احمد نے بھی نصف سنچری شراکت قائم کی

پاکستان نے ویسٹ انڈیز کو دبئی میں کھیلے گئے دوسرے ٹی20 انٹرنیشنل میں 16 رنز سے شکست دے دی۔

اس جیت کے ساتھ ہی پاکستان نے تین میچوں کی سیریز بھی اپنے نام کر لی ہے۔ تیسرا اورآخری میچ منگل کے روز ابوظہبی میں کھیلا جائے گا۔

دوسرے ٹی 20 میں دونوں ٹیمیں بغیر کسی تبدیلی کے میدان میں اتریں۔

ویسٹ انڈین کپتان کارلوس بریتھ ویٹ نے ٹاس جیت کر پہلے فیلڈنگ کا فیصلہ کیا جس کا سبب رات کے وقت پڑنے والی اوس میں بولنگ سے بچنا تھا۔

پاکستان نے مقررہ 20 اوورز میں چار وکٹوں پر 160 رنز بنائے ۔

جواب میں ویسٹ انڈیز کی ٹیم نو وکٹوں پر ایک 144 رنز بناسکی ۔

پاکستانی اننگز میں شرجیل خان کے جلد آؤٹ ہونے کے بعد پاکستانی بیٹسمین کھل کر کھیلنے میں کامیاب نہ ہوسکے۔

خالد لطیف اور بابراعظم کے درمیان نصف سنچری شراکت قائم ہوئی۔ خالد لطیف 40 رنز بناکر آؤٹ ہوئے۔

،تصویر کا ذریعہAFP

،تصویر کا کیپشن

سہیل تنویر سب سے کامیاب بولر رہے انھوں نے صرف 13 رنز دے کر تین وکٹیں حاصل کیں

شعیب ملک اور کپتان سرفراز احمد نے بھی نصف سنچری شراکت قائم کی۔

سرفراز احمد پانچ چوکوں کی مدد سے 46 رنز بناکر ناٹ آؤٹ رہے۔

یہ اننگز انھیں مین آف دی میچ ایوارڈ دیے جانے کا سبب بھی بنی۔

شعیب ملک نے تین چوکوں اور ایک چھکے کی مدد سے 37 رنز کی اننگز کھیلی۔

سات میچوں کے بعد انھیں چوتھے نمبر پر بیٹنگ پر کھیلنے کا موقع ملا تاہم وہ آزادانہ سٹروکس کھیلنے میں پوری طرح کامیاب نہ ہوسکے۔

عمراکمل بیٹنگ آرڈر کی اس تقسیم کے سبب چھٹے نمبر پر آئے اور صرف ایک گیند کھیل پائے۔

ویسٹ انڈیز کی فیلڈنگ اس میچ میں بھی اچھی نہیں تھی۔ نکولس پورن ڈیپ سکوائر لیگ پر خالد لطیف کا کیچ لینے میں ناکام رہے جبکہ سیموئل بدری نے بیک ورڈ پوائنٹ پر شعیب ملک کا کیچ اس وقت گرادیا جب انھوں نےکوئی رن نہیں بنایا تھا۔

پاکستانی بولرز نے ایک بار پھر عمدہ کارکردگی کا مظاہرہ کیا۔

،تصویر کا ذریعہGetty

،تصویر کا کیپشن

ویسٹ انڈیز کی وکٹیں وقفے وقفے سے گرتی رہیں اور وہ اپنے ہدف سے دور ہوتی گئی

عماد وسیم نے حسب معمول چارلس کو آؤٹ کر کے ابتدا کی جس کے بعد سہیل تنویر لوئس اور سیمیولز کی وکٹیں حاصل کرنے میں کامیاب ہوگئے ۔

ویسٹ انڈیز کی وکٹیں وقفے وقفے سے گرتی رہیں اور وہ اپنے ہدف سے دور ہوتی گئی۔

نوجوان حسن علی نے عمدہ بولنگ کرتے ہوئے فلیچرپولارڈ اور بریتھ ویٹ کو آؤٹ کردیا۔

سنیل نارائن نے ایک چھکے اور چار چوکوں کی مدد سے تیس رنز بناکر ویسٹ انڈین اننگز کی آخری گیند پر وہاب ریاض کی وکٹ بنے۔

حسن علی نے 49 رنز دے کر تین وکٹیں حاصل کیں۔ وہاب ریاض نے ایک وکٹ کے لیے اپنے چار اوورز میں 42 رنز دیے۔

سہیل تنویر سب سے کامیاب بولر رہے انھوں نے صرف 13 رنز دے کر تین وکٹیں حاصل کیں۔