http://www.bbc.com/urdu/

Sunday, 25 January, 2009, 18:32 GMT 23:32 PST

مناء رانا
بی بی سی اردو ڈاٹ کام، لاہور

’ممکن ہے آصف بری ہی ہو جائیں‘

پاکستان کرکٹ بورڈ کے چیئرمین اعجاز بٹ کا کہنا ہے کہ اگر آئی پی ایل محمد آصف پر پابندی لگاتی ہے تو وہ پابندی کی مدت گزرنے کے بعد ہی پاکستان کے لیے کھیل سکیں گے تاہم انہوں نے امید ظاہر کی کہ محمد آصف پر بہت کم پابندی لگے گی۔

پی سی بی کے چئرمین اعجاز بٹ نے بی بی سی سے بات کرتے ہوئے کہا کہ ان کی آئی پی ایل کی انتظامیہ سے بات ہوئی ہے جس سے انہیں یہ پتا چلا ہے کہ وہ اس معاملے پر ایک آدھ دن میں فیصلہ سنا دیں گے۔

انہوں نے بتایا کہ انہیں اس بات چیت سے یہ تاثر ملا ہے کہ محمد آصف کو بہت کم مدت کی پابندی کی سزا ہو نے کا امکان ہے۔ انہوں نے کہا کہ یہ بھی ہو سکتا ہے کہ محمد آصف کو اس الزام سے بری کر دیا جائے۔

پی سی بی کے چئرمین نے واضح کیا کہ وہ آئی پی ایل کے ڈرگ ٹریبیونل کے فیصلے کا احترام کریں گے اور محمد آصف پر اگر پابندی لگی تو وہ اس پابندی کے ختم ہونے کے بعد ہی پاکستان کے لیے کھیل سکیں گے۔

اعجاز بٹ کے مطابق گزشتہ برس دبئی ائر پورٹ پر محمد آصف سے ممنوعہ شے کی برآمدگی پر بیس دنوں حراست میں رہنے کے واقعے کا آئی پی ایل کے ڈوپنگ معاملے سے کوئی تعلق نہیں اور اس واقعے کے بعد محمد آصف پر کوئی پابندی نہیں لگائی گئی تھی اور دبئی کا معاملے کی تحقیق کے لیے جو کمیٹی بنائی گئی ہے اس کا مقصد ہے کہ وہ اس معاملے کی تحقیق کرے۔

سری لنکا کے ہاتھوں پاکستان کی قذافی سٹیڈیم لاہور میں ہونے والے میچ میں بدترین شکست پر اعجاز بٹ کافی مایوس تھے۔ ان کا کہنا تھا کہ انہیں اس پر دکھ ہوا ہے اور اس لیے انہوں نے اس میچ کی رپورٹ طلب کی ہے جس کی روشنی میں اس شکست کے اسباب کا جائزہ لیں گے۔