BBCUrdu.com
  •    تکنيکي مدد
 
پاکستان
انڈیا
آس پاس
کھیل
نیٹ سائنس
فن فنکار
ویڈیو، تصاویر
آپ کی آواز
قلم اور کالم
منظرنامہ
ریڈیو
پروگرام
فریکوئنسی
ہمارے پارٹنر
آر ایس ایس کیا ہے
آر ایس ایس کیا ہے
ہندی
فارسی
پشتو
عربی
بنگالی
انگریزی ۔ جنوبی ایشیا
دیگر زبانیں
 
وقتِ اشاعت: Friday, 13 February, 2009, 15:45 GMT 20:45 PST
 
یہ صفحہ دوست کو ای میل کیجیئے   پرِنٹ کریں
’ پابندی 15 جولائی سے لگائی جائے‘
 

 
 
محمد آصف
پاکستان کرکٹ بورڈ محمد آصف پر پابندی کے خاتمے کے بعد انہیں جلد سے جلد پاکستانی ٹیم میں دیکھنا چاہتا ہے
پاکستان کرکٹ بورڈ نے آئی پی ایل سے کہا ہے کہ محمد آصف پر پابندی کا اطلاق بائیس ستمبر کے بجائے پندرہ جولائی سے کیا جائے۔

پاکستان کرکٹ بورڈ کے چیئرمین اعجاز بٹ کا کہنا ہے کہ اس ضمن میں آئی پی ایل کو خط تحریر کیا گیا ہے جس میں کہا گیا ہے کہ چونکہ پاکستان کرکٹ بورڈ نے محمد آصف کو آئی پی ایل میں مثبت ڈوپ ٹیسٹ کا نتیجہ آنے کے بعد گزشتہ سال پندرہ جولائی کو معطل کیا تھا لہذا آئی پی ایل بھی یہ پابندی بائیس ستمبر کے بجائے پندرہ جولائی سے تصور کرے۔

واضح رہے کہ آئی پی ایل کے ڈرگ ٹریبونل نے محمد آصف پر جو ایک سالہ پابندی عائد کی ہے وہ بائیس ستمبر2008ء سے اکیس ستمبر2009ء تک ہے۔
پاکستان کرکٹ بورڈ محمد آصف پر پابندی کے خاتمے کے بعد انہیں جلد سے جلد پاکستانی ٹیم میں دیکھنا چاہتا ہے۔

اعجاز بٹ کہہ چکے ہیں کہ پابندی ختم ہونے کے بعد محمد آصف کو سینٹرل کنٹریکٹ بھی دیا جائے گا۔

دریں اثناء محمد آصف کے معاملات دیکھنے والی مارکیٹنگ کمپنی نے یہ اعتراض اٹھایا ہے کہ محمد آصف پر پابندی کے حکم نامے پر آئی پی ایل ڈرگ ٹریبونل کے تین میں سے دو ارکان کے دستخط ہی نہیں ہیں۔ دستخط نہ کرنے والوں میں سنیل گواسکر شامل ہیں۔

محمد آصف نے پابندی کے معاملے پر مزید مشاورت کے لیے برطانوی ڈوپنگ ماہر ڈاکٹر مائیکل گراہم کو پاکستان آنے کے لیے کہا ہے ۔ ڈاکٹر مائیکل گراہم ممبئی بھی جائیں گے۔

 
 
اسی بارے میں
ڈوپنگ ماہر کی پاکستان آمد
07 February, 2009 | نیٹ سائنس
تازہ ترین خبریں
 
 
یہ صفحہ دوست کو ای میل کیجیئے   پرِنٹ کریں
 

واپس اوپر
Copyright BBC
نیٹ سائنس کھیل آس پاس انڈیاپاکستان صفحہِ اول
 
منظرنامہ قلم اور کالم آپ کی آواز ویڈیو، تصاویر
 
BBC Languages >> | BBC World Service >> | BBC Weather >> | BBC Sport >> | BBC News >>  
پرائیویسی ہمارے بارے میں ہمیں لکھیئے تکنیکی مدد