BBCUrdu.com
  •    تکنيکي مدد
 
پاکستان
انڈیا
آس پاس
کھیل
نیٹ سائنس
فن فنکار
ویڈیو، تصاویر
آپ کی آواز
قلم اور کالم
منظرنامہ
ریڈیو
پروگرام
فریکوئنسی
ہمارے پارٹنر
آر ایس ایس کیا ہے
آر ایس ایس کیا ہے
ہندی
فارسی
پشتو
عربی
بنگالی
انگریزی ۔ جنوبی ایشیا
دیگر زبانیں
 
وقتِ اشاعت: Tuesday, 10 March, 2009, 13:42 GMT 18:42 PST
 
یہ صفحہ دوست کو ای میل کیجیئے   پرِنٹ کریں
پاکستان: کرس براڈ کی باقاعدہ شکایت
 

 
 
 کرس براڈ
کرس براڈ نے سری لنکا کی ٹیم پر لاہور میں حملے کے بعد یہ بیان دیا تھا کہ حملے کے وقت وہاں کوئی سیکیورٹی اہلکار موجود نہیں تھا
پاکستان کرکٹ براڈ نے انٹرنیشنل کرکٹ کونسل کو ریفری کرس براڈ کی پاکستان سیکیورٹی پر تنقید کے خلاف باقائدہ تحریری شکایت بھیج دی ہے۔

کرس براڈ نے سری لنکا کی ٹیم پر لاہور میں حملے کے بعد یہ بیان دیا تھا کہ حملے کے وقت وہاں کوئی سیکیورٹی اہلکار موجود نہیں تھا اور انہوں نے اور ان کے ساتھیوں نے نیچے بیٹھ کر اپنی جانیں بچائیں۔

پاکستان کرکٹ براڈ نے کرس براڈ کے اس بیان کو غیر ذمہ دارانہ قرار دیتے ہوئے اس پر سخت تنقید کی ہے۔

پاکستان کرکٹ بورڈ کے چئرمین اعجاز بٹ کے مطابق سری لنکا کی کرکٹ ٹیم پر حملے کے حوالے سے رپورٹ انٹرنیشنل کرکٹ کونسل کو بھجوا دی گئی ہے اور اس رپورٹ میں اس سانحہ کے بعد کیے جانے والے اقدامات اور مستقبل کے سیکیورٹی کے لائحہء عمل کا ڈکر بھی کیا گیا ہے۔

اعجاز بٹ کے مطابق دہشت گردوں کے اس حملے کے وقت پاکستان کے سیکیورٹی اہلکاروں نے اپنی جانوں پر کھیل کر غیر ملکی مہمانوں کی جان بچائی جن میں کرس براڈ بھی شامل ہیں۔

اعجاز بٹ نے کہا کہ کرس براڈ کی طرف آنے والی گولی کو ایک سیکیورٹی اہلکار نے کرس براڈ پر چھلانگ لگا کر خود پر لیا اور شدید زخمی ہوا اس کے باجود بھی کرس براڈ نے اس طرح کا بیان دیا جو کہ آئی سی سی کے ضابطۂ اخلاق کی خلاف ورزی ہے۔ ان کے اس رویے سے ہمیں دکھ ہوا ہے اس لیے ہم نے آئی سی سی کو اس کی باقائدہ تحریری شکایت درج کروائی ہے۔

خراش تک نے آئی تھی
 لاہور میں سری لنکا ٹیم پر حملے میں میچ ریفری کرس براڈ سمیت آسٹریلیا سے تعلق رکھنے والے فیلڈ ایمپائر سائمن ٹوفل اور سٹیو ڈیوس کو کوئی خراش نہیں آئی
 
لاہور

یاد رہے کہ اس واقعے میں میچ ریفری کرس براڈ سمیت آسٹریلیا سے تعلق رکھنے والے فیلڈ ایمپائر سائمن ٹوفل اور سٹیو ڈیوس کو کوئی خراش نہیں آئی۔ پاکستان سے تعلق رکھنے والے ایک فورتھ ایمپائر احسن رضا پیٹ پر گولیاں لگنے سے شدید زخمی ہوئے جب کہ ایمپائرز کی اس وین کا ڈرائیور ہلاک ہوا۔ سیکیورٹی اہلکاروں میں سات مارے گئے جبکہ گیارہ زخمی ہو گئے تھے۔
 
 
ٹوئنٹی ٹوئنٹی سے 2010
ہندوستان 20-20 کے نشے میں اور 2010 میں بدلا بدلا دلی
 
 
پاکستانی پریس میڈیا کیا کہتا ہے؟
پاکستانی پریس ’را‘ کی شبیہ دیکھ رہا ہے
 
 
جنازے اور یادگاریں
لاہور حملے کا اگلا دن تصاویر میں
 
 
لاہور جتنے منہ اتنی باتیں
ٹی وی تجزیہ نگاروں کی ’جلدبازیاں‘
 
 
حملہ آور لاہور میں حملہ
سری لنکن کرکٹرز پر حملے کے بعد کی تصاویر
 
 
لاہور امن ریلی
جنگ نہیں، امن چاہتے ہیں
 
 
تازہ ترین خبریں
 
 
یہ صفحہ دوست کو ای میل کیجیئے   پرِنٹ کریں
 

واپس اوپر
Copyright BBC
نیٹ سائنس کھیل آس پاس انڈیاپاکستان صفحہِ اول
 
منظرنامہ قلم اور کالم آپ کی آواز ویڈیو، تصاویر
 
BBC Languages >> | BBC World Service >> | BBC Weather >> | BBC Sport >> | BBC News >>  
پرائیویسی ہمارے بارے میں ہمیں لکھیئے تکنیکی مدد