جوہری ہتھیار

  1. سنہ 1945 میں تباہ ہونے والا شہر ہیروشیما

    رواں ماہ جاپانی شہر ہیروشیما اور ناگاساکی پر امریکی ایٹم بم گرائے جانے کے 75 سال پورے ہو رہے ہیں۔ برطانوی فوٹو جرنلسٹ کیرن لی اسٹو نے تین خواتین سے بات کی جنھیں یہ دھماکے اب بھی اچھی طرح یاد ہیں۔

    مزید پڑھیے
    next
  2. دوسری عالمی جنگ کے دوران جاپان کے شہر ہیروشیما پر آج سے 75 برس قبل امریکہ کی جانب سے پہلا ایٹم بم گرایا گیا تھا۔

  3. جگل پروہت

    نمائندہ بی بی سی نیوز

    رفال

    29 جولائی کو فرانس میں بنے 36 رفال جیٹ طیاروں کی خریداری کے معاہدے میں پہلے پانچ جہاز انڈیا کے شہر امبالا پہنچے۔ تقریباً تین سال بعد جنوری سنہ 2004 میں اس تجویز کو وزارت دفاع نے سردخانے میں ڈال دیا تھا۔

    مزید پڑھیے
    next
  4. سحر بلوچ

    بی بی سی اردو ڈاٹ کام، اسلام آباد

    پاکستانی ہتھیار

    نیشنل تھریٹ انیشیٹو کی 2020 کی اس رپورٹ میں پاکستان کی طرف سے کیے گئے اقدامات کو سراہتے ہوئے کہا گیا ہے کہ ملک میں جوہری مواد کے تحفظ کو یقینی بنانے کے لیے خاصی محنت کی گئی ہے اور اس بارے میں اقدامات پر عمل در آمد کرنے میں بھی ’بہتری آئی ہے۔‘

    مزید پڑھیے
    next
  5. ایران

    ایران کے سرکاری میڈیا کا کہنا تھا کہ ملک کے سوشل میڈیا صارفین نے گرمدارہ اور قدس کے شہروں کے قریب دھماکے سنے ہیں تاہم حکام نے اس کی تردید کی ہے۔

    مزید پڑھیے
    next
  6. شمالی کوریا، جنوبی کوریا، امریکہ، ایٹمی ہتھیار

    شمالی کوریا کے وزیرِ خارجہ ری سون گوون نے کہا کہ ’دو سال قبل بہتر تعلقات کی جو امید دنیا بھر میں ظاہر کی جا رہی تھی، اب وہ مایوسی میں تبدیل ہو چکی ہے۔‘

    مزید پڑھیے
    next
  7. آصف جیلانی

    صحافی

    پاکستان

    اس میں شک نہیں کہ یہ ذوالفقار علی بھٹو تھے، جو سن اکہتر میں بنگلہ دیش کی جنگ کے نتیجہ میں پاکستان کے دو لخت ہونے کے بعد برسراقتدار آئے تھے اور جنہوں نے پاکستان کو جوہری قوت بنانے کا منصوبہ شروع کیا۔

    مزید پڑھیے
    next
  8. لیومین لیما

    بی بی سی منڈو

    کورونا، روس،

    روس اس وقت کورونا وائرس کے بڑھتے ہوئے معاملات سے پریشان ہے۔ خیال ہے کہ سوویت یونین میں آباد انٹیلیجنس شہر اس کی گرفت میں ہیں۔

    مزید پڑھیے
    next
  9. کورونا وائرس

    امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کے ایک ٹویٹ پر چین بھڑک اٹھا ہے۔ ایک امریکی سینیٹر نے تو اسے چین کا حیاتیاتی ہتھیار تک کہہ ڈالا۔ چین کے وزارت خارجہ کے ترجمان نے وائرس کے لیے امریکی فوجیوں کو ذمہ دار بتایا۔

    مزید پڑھیے
    next
  10. ریڈم ون، فلنٹ شائر

    برطانیہ میں کیمیائی اور حیاتیاتی ہتھیاروں کی تیاری اور انھیں ذخیرہ کرنے اور تلف کرنے کے وہ مقامات جو یہاں باقی رہ جانے والی آلودگی کے باعث خطرے کی زد میں ہیں۔

    مزید پڑھیے
    next