کپڑوں کی صنعت

  1. نکھل انعام دار

    بی بی سی بزنس نامہ نگار، ممبئی

    دیپکا پاڈوکون اور رنویر سنگھ

    میکنسے کے اعداد و شمار کے مطابق سنہ 2022 تک انڈیا میں کپڑوں اور لباس کی مارکیٹ کی کل مالیت 60 ارب ڈالرز ہو جائے گی۔ جو جرمنی اور برطانیہ کے مقابلے میں دنیا کی چھٹی بڑی مارکیٹ بنے گی۔

    مزید پڑھیے
    next
  2. لورا جونز

    بی بی سی نیوز، بزنس رپوٹر

    Singer Tinashe in front of Shein sign.

    کورونا وائرس کی وبا کے دوران کپڑوں کی اس چینی کمپنی کی مقبولیت آسمان کو چھونے لگی ہے۔ مگر کیا آپ کی عمر 30 سال سے زیادہ ہے؟ پھر امکان یہ ہے کہ آپ نے اس کا نام بھی نہیں سنا ہو گا۔

    مزید پڑھیے
    next
  3. نیاز فاروقی

    بی بی سی، نئی دہلی

    ساچی

    انڈین فیشن ڈیزائنر سبیاساچی مکھرجی کے کام کے مداح انڈیا ہو یا پاکستان ہر جگہ موجود ہیں لیکن ان میں کم از کم مدھیہ پردیش کے وزیرِ داخلہ نروتم مشرا شامل نہیں ہیں جن کی تنقید اور انتباہ کے بعد ڈیزائنر نے اپنا ایک اشتہار واپس لے لیا ہے۔

    مزید پڑھیے
    next
  4. پیرس ویشن ویک میں ژیوانچی پھندہ نما نیکلس پہچنے ہوئے

    پیرس فیشن ویک میں کیٹ واک کے دوران تین ماڈلوں کو سونے اور چاندی سے بنے پھندہ نما ہار پہنائے گئے تھے۔

    مزید پڑھیے
    next
  5. جوان مارٹینز

    بی بی سی ٹریول

    درہ

    صحارا کے خطے کے مردوں کا دلکش نیلے رنگ کا لباس اب ماضی کا حصہ بنتا جا رہا ہے لیکن موریطانیہ میں اس لباس کی روایت ابھی بھی نہ صرف زندہ ہے بلکہ لگ رہا ہے کہ مستقبل میں بھی یہ جاری رہے گی۔

    مزید پڑھیے
    next
  6. مرزا اے بی بیگ

    بی بی سی اردو ڈاٹ کام، دہلی

    پاکستانی اٹائر

    انڈیا میں فیشن کی دنیا سے وابستہ افراد کا کہنا ہے کہ دلی ہو کہ سورت، پنجاب کا شہر امرتسر ہو کہ لدھیانہ پاکستانی سوٹ کی مانگ ہر جگہ ہے۔

    مزید پڑھیے
    next
  7. خاتون

    زارا کی ڈیزائنر وینیسا نے ایک فلسطینی ماڈل قاہر کے ساتھ انسٹاگرام پر بات چیت کے دوران ان کے لیے مبینہ طور پر ’نسل پرستانہ‘ الفاظ استعمال کیے اور انھیں مسلمان ہونے کی وجہ سے ’آپ لوگ‘ کہہ کر مخاطب کیا۔

    مزید پڑھیے
    next
  8. ریاض سہیل

    بی بی سی اُردو ڈاٹ کام، لاڑکانہ

    فریدہ مہر

    ’ہم روزانہ صبح کو گاؤں سے نکلتے اور شام کو واپس جاتے، ہمارا یومیہ پانچ سو روپے کرایہ لگ جاتا تھا۔ اس طرح ہمیں پچیس دن لگ گئے، بالاخر ایک دکان کی دستیابی کے بارے میں سُنا تو ہم مالک کے پاس پہنچ گئے۔ مالک نے کہا کہ عجیب لگتا ہے کہ ایک عورت آ کر دکان پر بیٹھے گی لوگ کیا کہیں گے؟‘

    مزید پڑھیے
    next
  9. تنویر ملک

    صحافی، کراچی

    ٹیکسٹائل

    پاکستان سے گھریلو ملبوسات جنھیں ٹیکسٹائل کے شعبے میں اپیرل کی کیٹگری میں شمار کیا جاتا ہے ان کی برآمدات میں رواں سال بے تحاشا اضافہ دیکھنے میں آیا اور اس شعبے کی برآمدات میں پاکستان نے انڈیا کو بھی پیچھے چھوڑ دیا لیکن ایسا ممکن کیسے ہوا؟

    مزید پڑھیے
    next
  10. رانا مِٹر

    میزبان بی بی سی ریڈیو فور

    چین میں فیکٹری ورکر

    گزشتہ سو سال سے ریاست، سرمائے کی نوعیت اور جنس کی جانب رویے چین کی خواتین کے لیے ایک مبہم فریم ورک رہے ہیں۔ یہ فریم ورک ایک طرف تو انھیں جکڑنے کی کوشش کرتا ہے لیکن کبھی کبھی آزادی حاصل کرنے کے ذرائع بھی مہیا کرتا ہے۔

    مزید پڑھیے
    next