تقسیمِ برصغیر

  1. مرزا اے بی بیگ

    بی بی سی اردو ڈاٹ کام، دہلی

    ٹیکسیلا

    پروفیسر ہلال احمد کے مطابق دونوں ممالک میں تاریخ کو دیکھنے کے نظریے میں ایک فرق ہم آہنگی کا ہے۔ انڈیا نے سب کو اپنے اندر سمانے اور سب سے ہم آہنگی پیدا کرنے کا نظریہ اپنایا ہے چنانچہ اس کی تاریخ نویسی میں ایک تواتر ملتا ہے جبکہ پاکستان کی سرکاری تاریخ میں اس کا فقدان ہے۔

    مزید پڑھیے
    next
  2. دیوینا گپتا

    نمائندہ بی بی سی

    زویا فاطمہ رضوی اور میر

    زندگی کی 42 بہاریں دیکھنے والی شازمان منصور سنہ 2008 میں کراچی ایئرپورٹ پر انڈیا جانے والی فلائٹ کا انتظار کر رہی تھیں اور اس وقت انھیں بتایا گیا کہ فلائٹ منسوخ کر دی گئی ہے۔ وہ خصوصی ویزے پر پاکستان اپنے میکے گئی تھیں اور انھیں انڈیا واپس آنا تھا۔ ان کے شوہر منصور ممبئی میں ان کا انتظار کر رہے تھے۔

    مزید پڑھیے
    next
  3. ریحان فضل

    بی بی سی نامہ نگار

    نہرو اور جناح

    پاکستان کے بانی محمد علی جناح اور انڈیا کے پہلے وزیر اعظم جواہر لال نہرو، دونوں کی شخصیات میں انگریزوں کے طرز زندگی کی گہری چھاپ تھی۔

    مزید پڑھیے
    next
  4. سحر بلوچ

    بی بی سی اردو ڈاٹ کام، حیدرآباد

    دھرم

    مُکھی ہاؤس سنہ 1920 میں ایک بااثر سندھی ہندو خاندان کے سربراہ مکھی پریتم داس کے بیٹے مُکھی جیٹھ آنند نے تعمیر کروایا تھا۔ مُکھی خاندان اس محل نما گھر میں 26 سال رہا اور پھر برِصغیر کی تقسیم کے بعد مُکھی خاندان کے افراد نے ایک ایک کر کے یہاں سے ہجرت کی۔

    مزید پڑھیے
    next
  5. نیاز فاروقی

    بی بی سی، نئی دہلی

    ادھم سنگھ

    برصغیر پر برطانوی سامراج کے قبضے کے خلاف کام کرنے والی غدر پارٹی کے رکن ادھم سنگھ نے سنہ 1919 میں انڈین پنجاب کے جلیانوالہ باغ میں ہونے والے قتل عام کے بعد بدلہ لینے کے لیے پنجاب کے سابق لیفٹیننٹ گورنر مائیکل او ڈائر کو لندن میں قتل کر دیا۔

    مزید پڑھیے
    next
  6. عقیل عباس جعفری

    محقق و مورخ، کراچی

    جناح

    ماؤنٹ پلیزنٹ روڈ پر واقع ہوم آفس میں ایک شخص آتا ہے اور کہتا ہے ’میں جناح سے ملنا چاہتا ہوں۔‘ جب ملاقاتی اسی وقت ملنے پر زور دیتا ہے تو جناح مصروفیت کی بنا پر معذرت کر لیتے ہیں۔ یہ سن کر وہ شخص بپھر جاتا ہے اور جناح کے جبڑے پر ایک زبردست مکا مارتا ہے۔ وہ پھر اپنی جیب سے ایک کھلا ہوا چاقو نکال لیتا ہے۔

    مزید پڑھیے
    next
  7. عقیل عباس جعفری

    محقق و مورخ، کراچی

    مولانا ابوالکلام آزاد

    مولانا ابوالکلام آزاد اور محمد علی جناح دونوں ہی بیسویں صدی میں ہندوستانی سیاست کے دو اہم رہنما تھے۔ محمد علی جناح، ابو لکلام آزاد سے عمر میں 12 برس بڑے تھے تاہم دونوں کی سیاست زندگی کا آغاز کم و بیش ایک ہی زمانے میں ہوا۔

    مزید پڑھیے
    next
  8. جھانوی مولے

    نمائندہ، بی بی سی مراٹھی

    سندھ

    سنہ 1947 میں تقسیم ہند کے نتیجے میں پیدا ہونے والی صورتحال نے انڈیا اور پاکستان دونوں کے لیے آزادی کی خوشی کو گہنا دیا تھا۔ کھینچی گئی سرحدوں کے دونوں جانب نئی نئی وجود میں آنے والی ریاستیں مذہبی فسادات سے شدید متاثر تھیں۔

    مزید پڑھیے
    next
  9. جینیفر کشن

    بی بی سی ٹریول

    انڈیا

    پکوانوں کے تاریخ دان تانوشری بھومک کہتے ہیں کہ ’اب ان ہوٹلوں کے حوالے سے ایک رومانوی احساس جڑا ہوا ہے مگر تقریباً ایک صدی تک انھوں نے کم آمدنی والے طبقے کو متوازن غذا فراہم کی ہے۔‘

    مزید پڑھیے
    next
  10. عقیل عباس جعفری اور حسن بلال زیدی

    بی بی سی اردو کے لیے

    شہزادی

    شہزادی عابدہ رات ایک بجے کوروائی کے محل پہنچیں، اپنا بھرا ہوا ریوالور اپنے شوہر کی جانب پھینکا اور کہا ’ہتھیار میرا ہے اور بھرا ہوا ہے۔ اسے استعمال کرو اور مجھے قتل کر دو۔ نہیں تو میں تمہیں قتل کردوں گی۔ یہ وہ واحد صورت ہے کہ تم اپنا بیٹا مجھ سے حاصل کرسکتے ہو۔‘ یہ سن کر نواب صاحب بدحواس ہوگئے۔

    مزید پڑھیے
    next