عالمی ادارۂ صحت

  1. بینظیر شاہ، نذرالاسلام

    صحافی

    کورونا

    پاکستان میں صحت کے حکام نے ملک میں کووڈ 19 کی چوتھی لہر کی ایک بڑی وجہ وائرس کی قسم ’ڈیلٹا‘ کو قرار دیا ہے جو دوسری اقسام کے مقابلے میں زیادہ تیزی سے پھیلنے کی صلاحیت رکھتی ہے۔

    مزید پڑھیے
    next
  2. Wuhan laboratory

    چین نے عالمی ادارہ صحت کی طرف سے کووڈ 19 کے وبائی مرض کے ماخد کی مزید تحقیقات کے مجوزہ منصوبے کو مسترد کرتے ہوئے کہا ہے کہ اس منصوبے میں سیاست کی آمیزش ہے جسے چین کسی صورت قبول نہیں کرے گا۔

    مزید پڑھیے
    next
  3. وکٹوریا گل

    سائنسی نامہ نگار، بی بی سی نیوز

    کووڈ 19

    کووڈ 19 کے آغاز کو اب 18 ماہ ہو چکے ہیں مگر اب بھی سائنسدان اس حوالے سے متفق نہیں ہیں کہ یہ وائرس کہاں سے آیا، کب آیا اور انسانوں میں کیسے پہنچا۔

    مزید پڑھیے
    next
  4. بابا رام دیو

    انڈیا میں ڈاکٹروں اور یوگا گورو رام دیو کے درمیان تنازع ختم ہوتا نظر نہیں آ رہا۔ انڈیا میں ڈاکٹروں نے یوگا گورو بابا رام دیو کے جدید طب کے بارے میں دیے گئے بیانات پر شدید تنقید کی ہے۔

    مزید پڑھیے
    next
  5. انڈیا

    امریکہ کے سیکریٹری صحت نے عالمی ادارہ صحت سے مطالبہ کیا ہے کہ وہ کووڈ 19 کے پھیلاؤ کے آغاز سے متعلق اگلے مرحلے میں شفاف تحقیقات کو یقینی بنائیں جبکہ فرانسیسی سوشل میڈیا انفلوئنسرز کا کہنا ہے کہ انھیں ایک پراسرار مالیاتی آفر موصول ہوئی ہے جس میں فائزر ویکسین سے متعلق منفی خبریں پھیلانے کا کہا گیا ہے۔ ادھر انڈیا میں مزید 4100 سے زیادہ ہلاکتیں ہوئی ہیں جبکہ پاکستان مثبت کیسز کی شرح بدستور پانچ فیصد سے نیچے ہے۔

    Catch up
    next
  6. طویل کام کے اوقات

    تحقیق سے یہ بات بھی سامنے آئی ہے کہ ہفتے میں 55 گھنٹے یا اس سے زیادہ کام کرنے والے لوگوں میں فالج کے امکانات زیادہ ہوتے ہیں اور دل کی بیماری کی وجہ سے موت واقع ہونے کی شرح 40-35 گھنٹے کام کرنے والوں کے مقابلے میں 17 فیصد زیادہ ہوتی ہے۔

    مزید پڑھیے
    next
  7. کورونا

    بی بی سی کے انٹرایکٹو نقشے اور چارٹس کی مدد سے جانیے کہ دنیا بھر میں کورونا کے متاثرین کی تعداد کیا ہے اور کون سے ملک اس سے سب سے زیادہ متاثر ہوئے ہیں۔

    مزید پڑھیے
    next
  8. شروتی مینن

    بی بی سی ریئلٹی چیک

    انڈیا کووڈ

    انڈیا اس وقت کورونا وائرس کی تباہ کن دوسری لہر کی گرفت میں ہے، تاہم حکومت کا کہنا ہے کہ اب کچھ علاقوں میں اس کا پھیلاؤ کم ہوتا نظر آ رہا ہے۔ وائرس کے پھیلاؤ کا صحیح اندازہ صرف وسیع پیمانے پر ٹیسٹس کے ذریعے ہی ممکن ہے۔ انڈیا میں ہر دن تقریبا بیس لاکھ ٹیسٹ کیے جا رہے ہیں۔ مئی کے آغاز میں یہ تعداد کم ہو کر پندرہ لاکھ ہو گئی تھی، تاہم بدھ پانچ مئی کو ایک بار پھر لگ بھگ بیس لاکھ ٹیسٹ کیے گئے۔

    مزید پڑھیے
    next
  9. कोरोना

    انڈیا میں گذشتہ 24 گھنٹوں کے دوران کورونا وائرس کے تین لاکھ 32 ہزار سے زیادہ نئے کیس رپورٹ ہوئے ہیں جو دنیا بھر میں یومیہ متاثرین کی اب تک کی سب سے بڑی تعداد ہے۔ پاکستان میں گذشتہ روز کورونا کے باعث ہونے والی ہلاکتوں کی تعداد 144 ہے۔

    Catch up
    next
  10. انڈیا

    برطانیہ نے انڈیا کو بھی ان ریڈ لسٹ ممالک کی فہرست میں شامل کر دیا گیا ہے جن پر برطانیہ کے سفر کی پابندی ہے۔ پاکستانی پولیس کے سابق سینئیر افسر ناصر درانی کورونا کا شکار ہو کر وفات پا گئے ہیں۔

    Follow
    next