صحافتی آزادی

  1. شہزاد ملک

    بی بی سی اردو ڈاٹ کام، اسلام آباد

    مدثر نارو اور ان کی مرحوم اہلیہ

    چیف جسٹس اسلام آباد ہائی کورٹ اطہر من اللہ نے کہا ہے کہ وفاقی حکومت کی یہ ذمہ داری ہے کہ وہ مطمئن کریں کہ ریاست یا ایجنسیاں لاپتہ شخص کو اغوا کرنے میں ملوث نہیں اور اگر جبری طور پر لاپتہ ہونے والے شخص کے بارے میں معلومات فراہم نہیں کی جاتیں تو وفاقی حکومت ذمہ دار اداروں کا پتہ لگا کر ان کے خلاف کارروائی عمل میں لائیں اور اس بارے میں عدالت کو آگاہ کریں۔

    مزید پڑھیے
    next
  2. جیمز کلیٹن

    ٹیکنالوجی رپورٹر، شمالی امریکہ

    BBC

    اس نظام میں چہرہ پہچاننے والی ٹیکنالوجی کا رابطہ ہینان میں موجود ہزاروں کیمروں سے ہو گا جس کے ذریعے حکام کسی 'باعثِ تشویش فرد' کے نظر آتے ہی خبردار ہو جائیں گے۔

    مزید پڑھیے
    next
  3. زبیر اعظم

    بی بی سی اردو ڈاٹ کام، اسلام آباد

    بےنظیر بھٹو

    سنہ1938 میں انڈیا کے شہر مدراس میں پیدا ہونے والے محمد ضیا الدین اپنے خاندان کے ساتھ پہلے مشرقی پاکستان کے دارالحکومت ڈھاکہ اور پھر 1960 میں 21 سال کی عمر میں کراچی پہنچے۔ بی فارمیسی کی ڈگری لیے انھوں نے ایک دواساز کمپنی میں نوکری شروع کی لیکن ان کا دل اس کام میں نہیں لگا۔

    مزید پڑھیے
    next
  4. اعظم خان

    بی بی سی اردو ڈاٹ کام، اسلام آباد

    سوشل میڈیا

    میڈیا انڈسٹری میں کام کرنے والے فہمیم مغل نے نوکری جانے کے بعد رکشہ چلانا شروع کیا لیکن ان کی اہلیہ اور دوستوں کے مطابق وہ خاندان کی ضروریات پوری نہ کر پانے کی وجہ سے ذہنی دباؤ کا شکار تھے۔

    مزید پڑھیے
    next
  5. عماد خالق

    بی بی سی اردو ڈاٹ کام، اسلام آباد

    عاصمہ شیرازی

    عاصمہ شیرازی کا بی بی سی اردو پر کالم شائع ہونے کے کچھ دیر بعد ہی پاکستان تحریک انصاف کی حکومت میں شامل وفاقی کابینہ کے چند ارکان اور وزیراعظم عمران خان کے مشیروں اور معاونین کی جانب سے ان کے کالم کا ایک مخصوص حصہ اٹھا کر اس پر سخت تنقید کی گئی۔

    مزید پڑھیے
    next
  6. عاصمہ شیرازی

    صحافی

    پریس کلب

    شہباز شریف نے بلاول بھٹو کو صحافیوں کے کیمپ میں ایک بار پھر متحد ہو کر شرکت کی دعوت دی اور اُن کی مشترکہ انٹری نے وہاں موجود کئی ایک صحافیوں کے چہروں ہر اطمینان دوڑا دیا کہ بالآخر جمہوریت، آزادی رائے اور عوامی حقوق کے لیے اپوزیشن جماعتیں اکٹھی ہو رہی ہیں۔ پڑھیے عاصمہ شیرازی کا کالم۔

    مزید پڑھیے
    next
  7. محمد کاظم

    بی بی سی اردو ڈاٹ کام، کوئٹہ

    حراست

    یہ کہانی ہے بلوچستان میں 92 نیوز چینل کے نمائندے محمد اقبال مینگل اور کیمرا مین شہزاد اقبال کی جو طالبان کے آنے کے بعد افغانستان کوریج کے لیے گئے اور کابل میں راستہ بھٹکنے پر طالبان کے ہاتھوں پکڑے گئے۔

    مزید پڑھیے
    next
  8. طالبان کا صحافیوں پر تشدد

    طالبان یقین دہانی کراتے رہے ہیں کہ صحافیوں کو کسی رکاوٹ کا سامنا نہیں کرنا پڑے گا لیکن افغانستان میں گذشتہ کچھ روز سے جاری احتجاج کی کوریج کرنے والے صحافیوں پر تشدد نے طالبان کے اس دعوے پر سوالیہ نشان لگا دیا ہے۔

    مزید پڑھیے
    next
  9. شہزاد ملک

    بی بی سی اردو ڈاٹ کام، اسلام آباد

    فیڈرل یونین آف جرنلسٹس کے سینئر رہنما سی آر شمسی کا کہنا ہے کہ گیارہ ستمبر کے واقعات کے بعد صحافیوں پر دباؤ میں اضافہ ہوا ہے۔

    پاکستان میڈیا ڈیولپمنٹ اتھارٹی کے نام سے حکومت کی جانب سے جو قانون لانے کی کوشش کی جا رہی ہے، اس پر نہ صرف صحافی تنظیمیں ابھی سے سراپا احتجاج ہیں بلکہ پارلیمان میں موجود حزب مخالف کی جماعتوں کے علاوہ انسانی حقوق اور وکلا تنظیمیں بھی اس بل کے آنے سے قبل ہی اس کی مخالفت کر رہی ہیں۔

    مزید پڑھیے
    next
  10. اشعر رحمان

    صحافی

    ایوب، عمران

    حکومت کی میڈیا کو ’کنٹرول‘ کرنے کی یہ تازہ ترین کوشش جسے پاکستان میڈیا ڈویلپمنٹ اتھارٹی بل ہمیں آج سے 58 برس قبل آج کے روز کہا گیا تھا جب 1963 ایوب دور میں پاکستان پریس اینڈ پبلیکیشن آرڈیننس متعارف کروایا گیا تھا۔

    مزید پڑھیے
    next