قدرت کا تحفظ

  1. ریاض سہیل

    بی بی سی اردو ڈاٹ کام

    پاکستان پرندے

    کراچی کے رہائشی سلمان بلوچ پاکستان میں مجموعی طور پر 362 اقسام کے پرندوں کا مشاہدے کرچکے ہیں جن میں کئی نایاب پرندے تھے۔

    مزید پڑھیے
    next
  2. A photo of a gorilla closing its eyes as butterflies fly around it, in Central African Republic

    مقابلہ جیتنے والی یہ تصویر انوپ شاہ نے سینٹرل افریقن ریپبلک میں اتاری تھی اور اسے 158 ملکوں سے موصول ہونے والی ایک لاکھ تصاویر میں سے فاتح قرار دیا گیا ہے۔

    مزید پڑھیے
    next
  3. شبینہ فراز

    صحافی

    ہرن، مہرانو

    سندھ کے شہر خیرپور سے 29 کلومیٹر کے فاصلے پرایک مربع میل رقبے پر واقع مہرانو ریاست خیرپور کے حکمراں میر مراد علی دوم کا وہ خواب ہے جہاں لاکھوں جانور اور پرندے قدرتی ماحول میں پرورش پا رہے ہیں۔

    مزید پڑھیے
    next
  4. اینتھونی ہیم

    بی بی سی ٹریول

    افریقہ

    روایتی ماسائی معاشرے میں شیروں کو مارنا ایک سماجی اور مذہبی سٹیٹس سے دوسرے میں جانا سمجھا جاتا تھا۔ لیکن کینیا میں ایک ماحول بچاؤ پروگرام کی بدولت دوبارہ ماسائی قبیلے کے لوگ اور جنگل کے شیر قریب قریب رہنا شروع ہو گئے ہیں۔

    مزید پڑھیے
    next
  5. عمر دراز ننگیانہ

    بی بی سی اردو لاہور

    جنگلات

    ایک مصنوعی طور پر روایتی انداز میں اگائے گئے کھیت یا جنگل کے مقابلے میں سمارٹ جنگل میں پودوں کو صرف ضرورت کے وقت اور ضرورت کے مطابق پانی ملتا ہے۔

    مزید پڑھیے
    next
  6. ایما ایلزوردی

    بی بی سی فیوچر

    میکسیکو

    نیلے رنگ کی خوبصورت سات مختلف اقسام کے باعث مقبول جھیل باکالار میں ساڑھے تین ارب سال پرانے سٹارمیٹولائٹس کی قدیم آبادی موجود ہیں۔

    مزید پڑھیے
    next
  7. ولیئم پارک

    بی بی سی فیوچر

    Ice caves

    گلیشیئرز کے جمنے، ان کی موٹائی، ان پر برف کی موجودگی کا ڈیٹا لے کر صنعت، زراعت، ماحول اور انسانی آبادی کی ضروریات کا مقابلہ کر کے اٹریخٹ یونیورسٹی کے ماہرِ جغرافیہ آرتھر لٹز اور ان کے ساتھی مصنفین نے ایک گلیشیئر ولنرابلیٹی انڈیکس بنائی ہے۔

    مزید پڑھیے
    next
  8. علی رضا رند

    صحافی، چاغی، بلوچستان

    کھجور کے درخت

    گوالشتاپ صحرا اور کھلے میدان میں واقع ایک بڑا نخلستان ہے جہاں پہنچنے کے بعد کئی مقامات پر کھجور کے جلے ہوئے درخت دیکھنے کو ملتے ہیں۔ کہیں پر یہ درخت خشک ہونے کے بعد زمین بوس ہوچکے تھے جبکہ کچھ جگہوں پر ان کی بکھری شاخیں ریت کی ٹیلوں کے نیچے دب چکی تھیں۔

    مزید پڑھیے
    next
  9. محمد زبیر خان

    صحافی

    جمشید اقبال

    صوبہ خیبر پختونخواہ کے ضلع لوئر چترال کی تحصیل دروش کے جنگلات میں لگی آگ پر قابو تو پا لیا گیا ہے لیکن آگ بجھانے کی کوشش میں رضا کارانہ طور حصہ لینے والے محکمہ جنگلات کے اہلکار جمشید اقبال اپنی جان سے ہاتھ دھو بیٹھے۔

    مزید پڑھیے
    next
  10. کیٹ شون باک

    صحافی

    جنگل

    ایشلے کا کام یہ ہے کہ وہ روز طلوعِ آفتاب سے غروبِ آفتاب تک جنگل پر نظر رکھیں کہ کہیں کوئی آگ بھڑک کر بے قابو نہ ہو جائے۔

    مزید پڑھیے
    next