جرمنی: انتہائی دائیں بازو کے کارکن کے گھر چھاپے میں پولیس اہلکار ہلاک

جرمنی تصویر کے کاپی رائٹ AFP

جرمنی کے شہر بویریا میں انتہائی دائیں بازو کی ایک تنظیم سے تعلق رکھنے والے شخص کے مکان پر چھاپے کے دوران سپیشل فورسز کا ایک اہلکار ہلاک ہو گیا ہے۔

حکام کا کہنا ہے کہ فائرنگ کے نتیجے میں 32 سالہ اہلکار ہلاک جبکہ تین زخمی ہوئے ہیں۔

حکام کے مطابق انتہائی دائیں بازو کی ایک تنظیم ’رائخ سٹیزن‘ سے تعلق رکھنے والے شخص نے پولیس پر فائرنگ کی ۔ تاہم اس شخص کو بعد میں حراست میں لے لیا گیا۔

حکام نے اس شخص کے پاس 31 بندوقوں کے لائسنس بھی منسوخ کر دیے ہیں۔

بویریا کے ایک قصبے کی مقامی انتظامیہ نے اس وقت پولیس کو طلب کیا جب اس شخص نے انتظامیہ سے تعاون کرنے سے انکار کر دیا۔ حکام نے بتایا کہ بدھ کی صبح جب سپیشل فورسز نے اس شخص کے مکان میں داخل ہونے کی کوشش کی تو اس نے فائرنگ شروع کر دی۔

رائخ سٹیزن موومنٹ

رائخ سٹیزن موومنٹ جرمنی کی وفاقی حکومت کو تسلیم نہیں کرتی۔ یہ موومنٹ موجودہ دور میں بھی رائخ کے وجود پر یقین رکھتی ہے۔ اس موومنٹ کی بنیاد تین دہائی قبل رکھی گئی تھی۔

تصویر کے کاپی رائٹ AFP

بویریا کے حکام کا کہنا ہے کہ اس گروپ کا نظریہ ’قوم پرست اور یہود دشمن ہے ۔۔۔ جو کہ واضح طور پر انتہائی دائیں بازو کا نظریہ ہے۔‘

حالیہ سالوں میں اس گروپ کی تعداد میں اضافہ ہوا ہے۔

بویریا کے وزیر داخلہ نے متنبہ کیا کہ اس گروپ کو محض ’پاگلوں کا گروہ‘ قرار دے کر نظر انداز نہیں کیا جا سکتا۔ انھوں نے کہا کہ اس موومنٹ کے چند ممبران پرتشدد کارروائیاں کرنے کے اہل ہیں۔

متعلقہ عنوانات

اسی بارے میں