شامی فوج پر ادلیب میں کلورین بم گرانے کا الزام

شام، اقوام متحدہ، کیمیائی ہتھیار تصویر کے کاپی رائٹ Reuters
Image caption فوجی اڈے سے اڑنے والے ہیلی کاپٹروں کے ذریعے کلورین گیس سے بھرے بیرل بم گرائے۔

اقوم متحدہ کی سکیورٹی کونسل کو پیش کی جانے ایک خفیہ والی رپورٹ میں دعویٰ کیا گیا ہے کہ شام کی حکومتی افواج نے گذشتہ برس مارچ میں شمال مغربی علاقے ادلیب میں تیسری مرتبہ زہریلی گیس کا حملہ کیا تھا۔

رپورٹ کے مطابق کہ فوجی اڈے سے اڑنے والے ہیلی کاپٹروں نے ایسے بیرل بم گرائے جس میں کلورین گیس موجود تھی۔

اس سے پہلے اگست میں شائع ہونے والی ایک رپورٹ میں شامی افواج پر دو مرتبہ کلورین گیس سے حملہ کرنے کا الزام عائد کیا گیا تھا۔

شام کی حکومت نے اس تازہ رپورٹ پر کوئی ردعمل ظاہر نہیں کیا ہے۔

یاد رہے کہ ماسکو اور واشنگٹن کے درمیان طے پانے والے معاہدے کے تحت سنہ 2013 میں شام اپنے تمام کیمیائی ہتھیار ناکارہ بنانے پر رضا مند ہوا تھا۔

اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل نے بھی ایک قرارداد کے ذریعے کیمیائی ہتھیار ناکارہ بنانے کے معاہدے کی حمایت کی تھی۔

تصویر کے کاپی رائٹ Reuters
Image caption اقوام متحدہ میں امریکہ کی سفیر نے کیمیائی ہتھیاروں کے استعمال کو 'وحشیانہ' قرار دیا ہے

اقوام متحدہ کی جانب سے شام میں جاری جنگ کے بارے میں گذشتہ 13 ماہ کے دوران جاری ہونے والی چوتھی رپورٹ میں حکومتی افواج پر ممنوعہ کیمیائی ہتھیار استعمال کرنے کا الزام عائد کیا گیا ہے۔

نامہ نگاروں کا کہنا ہے کہ رپورٹ کا نتیجہ ذمہ داروں کے خلاف کارروائی کے طریقہ کار کے حوالے سےسلامتی کونسل کے پانچ مستقل اراکین کے درمیان اختلاف کا باعث بن سکتا ہے۔

اس سے پہلے اگست میں شائع ہونے والی تحقیقاتی رپورٹ میں اسلامی شدت پسند تنظیم دولت اسلامیہ پرسلفر گیس استعمال کرنے کا الزام عائد کیا گیا تھا۔

جمعے کو جاری ہونے والی اقوام متحدہ کی رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ حکومتی افواج نے ہیلی کاپٹروں سے بیرل بم گرائے۔

شام افواج کے ہیلی کاپٹروں نے ممکنہ طور پر دو عسکری اڈوں سے پروازیں کی۔

انکوائری رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ ’اُس وقت ہیلی کاپٹر کے سکارڈنز کو کنٹرول کرنے والے افراد کے نام کی تصدیق نہیں کی جا سکتی ہے۔‘

رپورٹ میں تجویز کیا گیا ہے کہ ’اس کے ذمے دار عسکری یونٹ کو کنٹرول کرنے والے ہیں اور اُن کے خلاف کارروائی کی جائے۔‘

1997یاد رہے کہ میں طے پانے والح کیمیائی ہتھیاروں کے معاہدے کے تحت کلورین گیس کو بطور ہتھیار استعمال کرنے پر پابندی ہے اور شام نے سنہ 2013 میں اس معاہدے پر دستخط کیے ہیں۔

اقوام متحدہ میں امریکہ کی سفیر نے کیمیائی ہتھیاروں کے استعمال کو ’وحشیانہ‘ قرار دیتے ہوئے تمام ممالک پر زور دیا ہے کہ وہ فوری اقدامات کریں۔

اسی بارے میں