اٹلی میں زلزلے سے کئی عمارتوں کو نقصان، متعدد افراد زخمی

تصویر کے کاپی رائٹ EPA
Image caption زلزلے سے کئی عمارتیں تباہ ہونے کی اطلاع ہے جبکہ کئی متاثرہ علاقوں میں لائٹ نہیں ہے

اٹلی کے مرکزی علاقوں میں بدھ کی رات دو بار زلزلہ آیا جس کے نتیجے میں کئی عمارتوں کو نقصان پہنچا جبکہ متاثرہ علاقوں میں لوگ زلزلے کے جھٹکوں سے خوف زدہ ہو کر گھروں سے باہر نکل آئے۔

حکام کے مطابق 5۔5 کی شدت کے پہلے زلزلے کا جھٹکا مقامی وقت کے مطابق رات نو بج کر دس منٹ پر صوبہ میسراتا میں ویسو کے پاس محسوس کیا گیا۔

اس کے تقریباً دو گھنٹے بعد اسی علاقے میں 1۔6 کی شدت کا دوسرا زلزلہ آیا۔ ان واقعات میں کئی افراد کے زخمی ہونے کی اطلاعات ہیں لیکن فوری طور پر کسی کی ہلاکت کی کوئی خبر نہیں ہے۔

عوام کے تحفظ سے متعلق محکمے کے ایک افسر فبریزیو کیروچو نے بتایا ہے کہ تقریباً دس افراد زخمی ہوئے ہیں جس میں سے چار کو شدید چوٹیں آئی ہیں۔

تصویر کے کاپی رائٹ EPA
Image caption کئي متاثرہ گاؤں میں پرانی عمارتوں کے منہدم ہونے کی خبریں ہیں اور ایس عمارتیں زیادہ گری ہیں

زلزلے کے یہ جھٹکے اٹلی کے دارالحکومت روم سمیت تقریباً سبھی مرکزی علاقوں میں محسوس کیے گئے۔ روم میں زلزلے سے عمارتیں ہل گئیں اور کھڑکیاں کھڑ کھڑانے لگیں۔

روم میں بی بی سی کی نامہ نگار کاٹیا ادلیر کا کہنا ہے کہ ایمرجنسی سروسز کے حکام متاثرہ علاقوں میں ابھی حالات کا اچھی طرح سے جائزہ لے رہے ہیں اور نقصان کا صحیح اندازہ کرنے کی کوشش کر رہے ہیں۔

ایک عینی شاہد نے اطالوی ٹی وی کو بتایا کہ انھوں نے اپنے سامنے ایک عمارت کے بعض حصوں کو گرتے ہوئے دیکھا۔

اٹلی میں رات کی تاریکی ختم ہونے پر ہی جمعرات کی صبح نقصان کا صحیح اندازہ ہوسکتا ہے لیکن ایک اندازے کے مطابق اس سے کیمرینوں شہر سب سے زیادہ متاثر ہوا ہے۔

اس شہر کے ایک رہائشی نے بی بی سی کو بتایا کہ 'ہر شخص تحفظ کے مد نظر گاڑیوں کے ذریعے یا پیدل ہی کیمرینو شہر چھوڑ رہا ہے۔ دو چرچ پوری طرح سے تباہ ہوگئے ہیں جبکہ کئی مکانات گر چکے ہیں۔'

تصویر کے کاپی رائٹ UGC
Image caption کیمرینو شہر میں منہدم ہونے والی ایک عمارت کے ملبے سے بغل والی گۂی پٹ گئی

بعض علاقوں میں زلزلے کے بعد سے بجلی نہیں ہے جبکہ بعض تاریخی عمارتوں کو بھی نقصان پہنچنے کی اطلاعات ہیں۔ روم میں زلزلے کے بعد سے بعض جگہوں پر تودے کھسکنے کے بھی واقعات پیش آئے ہیں۔

اوسستا شہر کے میئر مارکو رندالی نے دوسرے زلزلے کے بارے میں بات کرتے ہوئے اطالوی نیوز ایجنسی انسا کو بتایا کہ 'یہ بہت زور دار اور تباہ کن زلزلہ تھا، لوگ باہر گلیوں میں چیخ رہے ہیں اور اب ہم بغیر روشنی کے ہیں۔'

متاثرہ علاقوں میں جمعرات کو سکول کالجز بند رکھنے کا اعلان کیا گيا ہے۔ مقامی میڈیا کے مطابق ملک کے وزیر اعظم روم کے دورے پر روانہ ہوچکے ہیں۔

اٹلی میں گذشتہ 24 اگست کو بھی جنوبی علاقے میں زلزلہ آیا تھا جس میں 298 افراد ہلاک ہوئے تھے۔ اس میں بھی پہاڑی علاقوں میں بہت سی عمارتیں تباہ ہوگئی تھیں۔

خبر رساں ادارے اے ایف پی کے مطابق اٹلی کے نیشنل جیوفزکس کے ادارے کے ایک افسر ماریو توزی نے کہا ہے کہ 'زلزلے کے بعد آنے والے جھٹکے کافی دیر تک، کئی بار مہینوں تک جاری رہ سکتے ہیں۔'

متعلقہ عنوانات

اسی بارے میں