منشیات، پورن اور موت کے لیے ووٹ کیا

جب گذشتہ جون میں برطانیہ کو یورپی یونین ریفرینڈم میں ووٹ کرنا تھا تو لوگوں کو یورپی یونین کا حصہ رہنے یا نکل جانے میں سے ایک کا انتخاب کرنا تھا۔

رواں ہفتے جب امریکہ میں انتخاب کا آغاز ہوا تو ووٹرز کو زیادہ لمبے عمل کا سامنا تھا۔

امریکیوں کو صرف ڈونلڈ ٹرمپ یا ہلیری کلنٹن کا انتخاب نہیں کرنا تھا بلکہ انھوں نے کئی معاملات پر اپنی رائے کا اظہار کرنا تھا۔

انھیں ریاستی اقدامات کے طور پر جانا جاتا ہے اور یہ ہر ریاست میں ووٹنگ پیپرز پر مختلف ہوتے ہیں۔

ووٹرز کو 20 سے زائد اہم مسائل پر فیصلہ کرنا تھا۔ ٹیکساس میں ان کی تعداد 50 سے بھی زیادہ ہے۔

امریکہ بھر میں سزائے موت، منشیات کے قوانین، کم از کم تنخواہ اور کیا پورن فلموں کے اداکاروں کو فلموں میں کنڈوم پہننے چاہیے جیسے مسائل پر ووٹ ڈالنے تھے۔

ووٹنگ کے بعد ان معاملات کیا ہوا اور یہ چیزیں کئی ریاستوں میں کیسے تبدیل ہوں گی؟

اب بھنگ کی پیداوار اور استعمال قانونی ہوگا

تصویر کے کاپی رائٹ AFP/Getty Images

امریکی ریاست کیلیفورنیا،میساچوسٹس اور نواڈا میں ووٹرز نے 21 سال سے زیادہ عمر والے ہر کسی کے لیے بھنگ کی پیداوار اور استعمال کو قانونی قرار دینے کے حق میں ووٹ ڈالا۔

شمالی ڈکوٹا اور آرکنساس نے بھی طبی استعمال کے لیے بھنگ کی اجازت دے دی ہے۔

سزائے موت برقرار

تصویر کے کاپی رائٹ Getty Images

2015 میں قانون دانوں نے ریاست نیبراسکا میں سزائے موت ختم کرنے کے لیے ووٹ کیا تھا۔

ووٹرز نے اب اس فیصلے کو الٹنے کا انتخاب کیا ہے۔

ریاست اوکلاہوما جہاں 2014 میں سزائے موت کو معطل کر دیا تھا، وہاں اب لووگوں نے سزائے موت کو ’آئینی تحفظ‘ دینے کے حق میں ووٹ کیا ہے۔

اس کا مطلب یہ ہوا کہ اب ریاستی عدالتوں کی جانب سے دی جانے والی سزا کو ’ظالمانہ اور غیرمعمولی‘ خیال نہیں کیا جا سکتا۔

کم تنخواہ والے ملازمین کو سب سے پہلے فائدہ

تصویر کے کاپی رائٹ Getty Images

ڈونلڈ ٹرمپ نے امریکہ میں ملازمت پیشہ طبقے اور کم آمدن والوں کو ووٹ ڈالنے کی جانب راغب کیا۔

ایریزونا، کولاراڈو اور مین کی ریاستوں میں ووٹرز نے آئندہ 2020 تک کم از کم تنخواہ 12 ڈالرز فی گھنٹہ اور واشنگٹن میں 13.50 ڈالر کرنے کے لیے ووٹ ڈالا۔

امریکی پورن فلموں میں اب کونڈم نہیں

تصویر کے کاپی رائٹ Getty Images

امریکہ میں زیادہ تر پورن فلمیں کیلیفورنیا کے علاقے سان فرنینڈو میں بنتی ہیں۔

لیکن ووٹرز نے اپوزیشن 60 نامی مسودہ کو مسترد کر دیا ہے جس کے تحت پورن فلموں میں اداکاروں کے لیے کونڈم پہننا لازم تھا۔

اس حوالے سے پہلے ہی قانون موجود ہے لیکن اس پر ہمیشہ عمل نہیں ہوتا۔

لیکن اپوزیشن کے ناقدین کو ڈر تھا کہ اگر یہ اقدام منظور ہو گیا تو پورن کی صنعت کسی دوسری سمت چل پڑے گی۔

خودکشی میں مدد فراہم کرنا قانونی ہوگا

تصویر کے کاپی رائٹ Getty Images

ریاست کولوراڈو میں ووٹرز نے اس منصوبے کے حق میں ووٹ دیا ہے جس کے تحت جو لوگ اپنی زندگی ختم کرنا چاہتے ہیں ان کو اس کی اجازت دی جائے۔ لیکن یہ تب ہو سکے گا جب دو ڈاکٹر اس کی اجازت دے دیں۔

لاعلاج بیماری میں مبتلا افراد جو ذہنی طور پر ٹھیک ہوں کو پہلے ہی اوریگون، مونٹانا، واشنگٹن اور ورمونٹ میں یہ حقوق حاصل ہیں۔

اسلحے کے قانون میں سختی

تصویر کے کاپی رائٹ Getty Images

ڈونلڈ ٹرمپ امریکی شہریوں کے اسلحہ رکھنے کے قانون کے حامی رہے ہیں اور جب گذشتہ جون میں اورلینڈو کے پلس نائٹ کلب میں 49 افراد کو گولیاں مار کر ہلاک کیا گیا تھا تو انھوں نے کہا تھا کہ ہلاک ہونے والے افراد بچ سکتے تھے اگر ان کے پاس گن ہوتی۔

لیکن واشنگٹن میں ووٹرز نے اس ایکٹ کے حق میں ووٹ دیا جس کے تحت عدالتیں بعض افراد سے یہ حق لے سکتی ہیں جن میں مجرم اور مقامی سطح پر تشدد میں ملوث افراد شامل ہیں۔

لاس اینجلس بے گھر افراد سے نمٹے

تصویر کے کاپی رائٹ Getty Images

لاس اینجلس میں ووٹرز نے بے گھر افراد کے لیے شہر میں دس ہزار مکانات تعمیر کرنے اور ان افراد کو امداد فراہم کرنے کے لیے 1.2 بلین ڈالرز خرچنے کے منصوبے کو منظور کیا ہے جن کو اپنے گھر کھونے کا ڈر لاحق ہے۔

لاس اینجلس میں پراپرٹی مالکان اس منصوبے کے لیے فنڈ فراہم کریں گے۔

اسی بارے میں