ترکی میں بچوں کے ریپ سے متعلق قانون کے خلاف مظاہرے

استنبول سمیت ترکی کے کئی شہروں میں ریپ سے متعلق مجوزہ قانون کے خلاف مظاہرے کیے گئے۔

ترکی

،تصویر کا ذریعہEPA

،تصویر کا کیپشن

ترکی میں ہزاروں افراد نے اس مجوزہ قانون کے خلاف احتجاج کیا جس کے مطابق کم سن لڑکی کا ریپ کرنے والا شخص اگر اس لڑکی سے شادی کر لیتا ہے تو وہ سزا سے بچ جائے گا۔

،تصویر کا ذریعہAFP

،تصویر کا کیپشن

استنبول میں ہزاروں افراد نے مظاہروں میں شرکت کی جن کا کہنا تھا کہ ایک ریپ کی کوئی توجیہہ نہیں ہوتی

،تصویر کا ذریعہEPA

،تصویر کا کیپشن

ناقدین کا کہنا ہے کہ اس سے بچوں کے ریپ کو قانونی حیثیت مل جائے گی۔

،تصویر کا ذریعہAP

،تصویر کا کیپشن

مظاہرین نے احتجاج کے دوران تالیاں بجاتے ہوئے نعرے لگائے کہ ’ہم خاموش نہیں رہیں گے، ہم اسے تسلیم نہیں کریں گے۔ اس بل کو فوری طور پر واپس لیا جائے۔‘

،تصویر کا ذریعہAP

،تصویر کا کیپشن

انقرہ، ازمیر اور تربزن سمیت دیگر شہروں میں بھی مظاہرے کیے گئے۔

،تصویر کا ذریعہAFP

،تصویر کا کیپشن

مظاہرین نے اے کے پی کے خلاف بھی نعرے بازی کی۔ اے کے پی صدر طیب اردوغان کی جماعت ہے جس نے یہ بل پیش کیا ہے۔

،تصویر کا ذریعہAFP

،تصویر کا کیپشن

خواتین نے پلے کارڈ اٹھا رکھے تھے جن پر درج تھا کہ ’ریپ ایک جرم ہے۔‘